Does Sardar Asif represent PTI policies?



  • Does Sardar Asif represent PTI policies?

    He believes that root cause of Pakistan security problem is interference of Pakistan in Afghanistan and not participation in WOT. He does not believe in any dialogue.

    Awam ke Adalat (GeoTV) - March 17th, 2012



  • His personal opinion.

    PTI's policy is to go neutral on this war on terror.



  • @insaftak

    I thought IK claim was that as leader of PTI, he will make sure that team members will follow.

    This is not the first time that this former foreign minister has gone against the declared policies of PTI.

    In program Magar on ARY News on March 3rd, he gave view that it is not a good option to proceed with gas from Iran.

    In my opinion, PTI should stop SA from giving his personal opinions, which are contradictory to principle policies of PTI. Otherwise, people will start to think that PTI policies are not firm and real.



  • insaftak

    His personal opinion.

    PTI's policy is to go neutral on this war on terror.

    ہمیں کیسے پتہ چلتا ہے کہ کونسی سٹیمنٹ ذاتی رائے ہے اور کونسی پارٹی پالیسی؟

    کیا آپ پی ٹی آئی کی نمایندگی کرتے ہیں؟

    کیا جس بیان پر عوام سے مخالفانہ رد عمل سامنے آ جائے وہ ذاتی رائے قرار دے دی جاتی ہے اور جس پر حوصلہ افزا رد عمل سامنے آ جائے وہ پارٹی پالیسی ہوتی ہے؟

    آخر عوام کو کیوں بے خبر رکھا جاتا ہے کہ پارٹی پالیسی کیا ہے؟

    پارٹی آخر مخالفت برائے مخالفت پر ہی کیوں چل رہی ہے اور اسکا کوئی پروگرام کیوں سامنے نہیں آ رہا کہ پارٹی کیا دوسروں سے مختلف کرنا چاہتی ہے اور کیسے کرنا چاہتی ہے؟

    فقط انقلاب کے نعروں سے عوام کو کب تک بے وقوف بنایا جاتا رہے گا؟



  • @ Bawa Bhai

    Bhai plz asay to na karena, jo party leader bolay ga usiko policy samjna chay.

    Ab Ch Nisar sb or Mian Shahbaz sb agar Kiyani se milte hy to kia hum smjhy ke wo establishment ki support pe believe kartay hy. nahi na bcoz baraday mian sb ne es cheez ko pasand nahi kia tha.



  • @ abdulhameed

    حمید بھائی

    پارٹی پالیسی کے لیے کسی کو بولنے کی ضرورت نہیں ہوتی. ہر کوئی جانتا ہوتا ہے کہ کس اشو پر پارٹی پالیسی کیا ہے؟

    جب پارٹی میں ہی کسی کو پتہ نہ ہو کہ پارٹی پالیسی کیا ہے تو پھر پارٹی کے مختلف لوگ مختلف بولیاں بولتے ہیں

    اور عوام کو پارٹی پالیسی کے بارے میں کنفیوز کرتے ہیں



  • @Bawa bhai

    Ap teak kahtay hy, I think nay log PTI policy ko nahi jantay.

    Magar PMLN ki top leadership hi me problem, Barday mian sb Zardari sb k baray me kuch kahtay hy or chotay mian sb totaly different bat kartay hy

    I think PTI needs to improve, or iski restructuring hogi new elections k baad, it will improve a bit.



  • @ abdulhameed

    حمید بھائی

    میرے خیال میں بات نئے اور پرانوں لوگوں کی نہیں ہے پالیسی اور پروسیجر کے فقدان کی ہے. پالیسی اور پروسیجر ایک تحریر شدہ ڈاکومنٹ ہوتا ہے جس کا ہر ایک کو پتہ ہوتا ہے اور ہر ایک اس پر عمل کا پابند ہوتا ہے. جو کوئی اس پالیسی اور پروسیجر سے انحراف کرتا ہے اسے شو کاز ٹونٹس جاری کر دیا جاتا ہے خواہ وہ پارٹی کا سربراہ ہی کیوں نہ ہو

    یہاں پالیسی اور پروسیجر تحریر شدہ نہ ہو وہاں یہ صورتحال پیش آتی رہتی ہے. یہ صرف پی ٹی آئی کا ہی نہیں ہر سیاسی پارٹی کا المیہ ہے



  • @ Bawa Bhai,

    me apse agree karta hon, and i would say this criticism is good for PTI, if they can listen to general public and their critics and then improve the party.

    BUT, why we don't criticize the old parties for the same issues? are we hopeless that they can't change themselves?



  • حمید بھائی

    اسمیں کوئی شک نہیں ہے کہ دونوں بڑی پارٹیوں اور انکے سرکردہ رہنماؤں کے ہاتھ کرپشن سے رنگے ہوئے ہیں اور وہ مافیا بن چکے ہیں. انکی سوچ اور عمل غیر جمہوری ہیں اور وہ عوام کے فائدے کی بجائے اپنے ذاتی مفاد کو سوچتے ہیں اور انہیں ہی مد نظر رکھکر اپنی پالیسیاں ترتیب دیتے ہیں

    اسوقت ایک ایسی پارٹی کی اشد ضرورت ہے جو عوام کی بالادستی کی بات کرے اور عوام کے مفادات اور حقوق سے مخلص ہو

    عوام کے حقوق سیاسی پارٹیوں کی بجائے فوج نے غصب کر رکھے ہیں اور اسوقت ملک کی اصل مالک اور حکمران اس ملک کی فوج ہے

    جو کبھی سامنے آ کر اور کبھی پس پردہ رہ کر حکومت کر رہی ہوتی ہے

    ہم بڑی سیاسی پارٹیوں سے تو اپنے ووٹ کے ذریعے چھٹکارہ حاصل کر سکتے ہیں لیکن مافیا کے ڈان یعنی فوج سے چھٹکارہ حاصل نہیں کر سکتے

    فوج سے چھٹکارہ حاصل کرنے کے لیے ایک اسے لیڈر کا ہونا ضروری ہے جو فوج یا اسٹبلشمنٹ کے اشاروں پر ناچنے کی بجائے فوج کی آنکھوں میں آنکھیں ڈالکر عوام کے حقوق فوج سے عوام کی طاقت کے ذریعے چھین سکے

    یہ مشکل ضرور ہے ناممکن نہیں ہے - یہ کام عمران خان نہیں کر سکتا کیونکہ وہ اقتدار کی ہوس میں فوج کی غلامی میں چلا گیا ہے

    آج نہیں تو کل کوئی نہ کوئی ضرور یہ کام کرے گا لیکن اس سے پہلے عوام میں اپنے حقوق کے حصول کے لیے شعور بیدار ہونا ضروری ہے. اس کے بغیر کوئی تبدیلی ممکن نہیں



  • @ Bawa

    (1) IK views on army and ISI:-

    (i) ISI no political role

    (ii) Army budget will be presented in assembly

    (iii) Cut the govt. non-developmental expenditure including army's exp.

    (2) I can't see any proof that he is army stooge. Please share with me, if u can see any.



  • @ abdulhameed

    بھائی جی

    اگر اییسا کچھ نہیں ہے تو جنرل پاشا کی ریٹایرڈ منٹ کے اعلان کے ساتھ ہی پی ٹی آئی کے غبارے سے ہوا کیوں نکل گی ہے اور سونامی جھاگ بن کر کیوں بیٹھ گیا ہے؟

    میری بات پر یقین نہیں کریں. سلیم صافی، ایاز امیر اور دوسروں کے کالم پڑھ لیں یا تی وی ٹاک شوز دیکھ لیں سب کا ایک ہی نقطۂ نظر ہے کہ

    مجھے پت جھڑوں کی کہانیاں نہ سنا سنا کے اُداس کر

    اسے یاد کر کے نہ دل دکھا جو گزر گیا سو گزر گیا

    ایاز امیر جو کل تک انقلابیوں کا ہیرو تھا، کیا وہ بھی غلط کہہ رہا ہے؟

    ایک بار پھرانقلاب کا التوا...ایازا میر

    تیس اکتوبر کو عمران کا لاہور میں جلسہ دیکھ کر میں وجد میں آگیا تھا اور نوجوانوں کے والہانہ پن کو ایک صبح تازہ سے تشبیہ دی تھی۔ صحافت میں اسم صفت کا زیادہ استعمال مناسب نہیں ہوتا ہے اور ضرورت سے زیادہ کسی کو سراہنا تو سب سے بڑا گناہ سمجھا جاتا ہے. میں حضرت لعل شہباز قلندر کے اگلے عرس پر دھمال ڈال کر کفارہ ادا کردوں گا اور الله کے ولی سے امید ہے کہ مجھے اپنے سایہ عاطفت میں لے لیں گے

    تیسری پارٹی کا آپشن تو امریکہ میں بھی ناکام ہو گیا ہے اور نہ ہی قدیم ترین جمہوریت، برطانیہ، میں فروغ پا سکا ہے۔ اگر عمران خاں کے بلبلے کو دیکھا جائے تو یوں لگتا ہے کہ پاکستان میں بھی یہ ناکام ہے

    عمران کے برگر کلب کے ممی ڈیڈی ووٹرز شاید ابھی بھی تحریک کو ووٹ دیں کیونکہ جوشیلے نوجوانوں کے سامنے کوئی اور امید ہے بھی نہیں لیکن اگر وہ مجھ گناہ گار کی بات مانیں تو اپنے ووٹ ضائع نہ کریں

    تیسرے آپشن نے زمین و آسمان کو بدلنے کا دعویٰ کیا تھالیکن اس کے بلبلے بیٹھ جانے کے بعد ہم محدود توقعات رکھنے پر مجبور ہیں۔ انقلاب اور تبدیلی کے نقارے اب سراب ہوچکے ہیں اور نئی منزل تلاش کرنے والوں کا کارواں اب قریشیوں اور مخدوموں سمیت خواہشات کے صحرا میں کہیں بھٹک رہاہے

    http://jang.net/urdu/archive/details.asp?nid=605279



  • @bawa

    Ji bhai ye unka analysis hy koi proof nahi

    Hawa nikal gai Kia matlab? Jo nai log ay thay kisi ne chorda to nahi phir kasay keh saktay hy k hawa nikal gai

    I think if pti can do few more good shows new ppl will start joining, I think big names nd electables go with the general public trend



  • @ abdulhameed

    بھائی جی

    جو پہلے لوگ آئے تھے انہوں نے گھر پر قبضہ جمانے کی کوشش کی جس سے گھر میں لتر پولا شروع ہوگیا

    وہ عمران خان جو ہر ایرے غیرے کو بلوا بلوا کر وکٹیں گرنے کی خوشخبری سنا رہا تھا. اب اسد قیصر نے نہایت ہی ہوشیاری اور چالاکی سے اسکی اپنی وکٹ ہی گرا دی اور اسے مجبور ہو کر اسد قیصر کے فیصلے کے آگے ہتھیار ڈالنے پڑے اور امیر مقام اور اسکے ساتھ شامل ہونے والے سات آٹھ ایم این ایز سے ہاتھ دھونا پڑے

    اسد قیصر نے دوسروں کو بھی پیغام دے دیا ہے کہ نئے آنے والے پچھلے بنچوں پر بیٹھنے کے لیے تیار ہو کر آئیں

    جس نے پچھلے بنچوں پر بیٹھنا ہے وہ اپنی پارٹی چھوڑ کر کیوں آئے گا؟ جو آ چکے ہیں وہ بھی مناسب موقع دیکھکر راہ فرار حاصل کر لیں گے



  • @bawa

    I don't agree with the concept of old and new in a Democratic party. All the positions should be filled Through elections, which IK is going to do now. After there will be no more debate of old/new



  • باوا جی ۔

    لگتا ہے اپ نے ملک کو ڈوبونے کی قسم کھائی ہوئی ہے ۔ اب جب عمران کا بیان ا گیا ہے کہ ۔ یا میں ہوں گا یا ایجنسیاں ۔ تو اپ اب اس بات کا پیچھا کوں نہیں چھوڑ دیتے ۔ ہم اپ کے تمام وہ جھوٹ جو اپ نے اس بات پر تلیں تھے کہ عمران کو ایجنسیاں سپورٹ کرتی ہیں معاف کرنے کے لیے تیار ہیں اگر ابھی بھی اپ عقل کے نخن لیں اور اس متوتر جھوٹ کو بولانا چھوڑ دیں ۔ اس میں اپ کی بھلائی ہے ۔ ابھی بھی اگر اپ

    ‎الله سے

    اپنے جھوٹ بولنے پر معافی مانگ لیں تو یقینآ وہ کریم ذات اپ کو معاف کر دے گی اور اپ کے اخرت کے عذاب میں کمی ا جائے گی ۔



  • آصف بھائی، باوا جی الله کے نیک اور برگزیدہ بندے ہیں لہذا آخرت میں ان کو عذاب کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا



  • علامہ بھائی ۔

    ہمیں بھی باوا جی کا الله کے نیک اور برگزیدہ بندے ہونے میں کوئی شک نہیں ۔ لیکن انسان تو غلطی کا پتلا ہے ۔ اور نیک سے نیک ادمی بھی غلطی کر دیتا ہے ۔ لیکن اپنی غلطی کے احساس ہونے پر فورآ الله سے معافی منگنا نیک ادمی کی صفت ہے ۔امید ہے باوا جی کو بھی اپنی غلطی کا احساس ہو جائے گا اور وہ بھی الله سے معافی مانک کر اپنی غلطیوں کا ازالہ کریں گیں ۔