Zara Sochiye



  • ذرا سوچیے کہ آپ جس پارٹی کو سپورٹ کر رہے ہیں

    کیا وہ عوام سے اور عوام کے حقوق سے مخلص ہے یا اسکی ہمدردی صرف نعروں اور منشور کی حد تک محدود ہے؟

    کیا وہ ملک، اسکے نظریے، آئین اور جمہوریت سے وفا دار ہے؟

    کیا اس جماعت میں تمام فیصلے کثرت رائے سے کیے جاتے ہیں یا فیصلوں پر چند مخصوس لوگوں کی اجارہ داری ہے؟

    کیا اس پارٹی میں ایسے لوگ تو شامل نہیں ہیں جو عوام کا استحصال کرتے ہیں اور انہیں اپنی رعایا سمجھتے ہیں؟

    کیا اس جماعت میں اقراپروری اور ذاتی پسند نہ پسند کو اہمیت دی جاتی ہے؟

    کیا اس جماعت میں باقائدگی سے پارٹی انتخابات منعقد ہوتے ہیں اور ہر پارٹی عہدیدار کو پارٹی ممبرز منتخب کرتے ہیں؟

    کیا اس پارٹی کے عہدیدار اپنے آپکو پارٹی ورکرز اور عوام کے سامنے جوابدہ سمجھتے ہیں؟

    کیا یہ پارٹی ماضی میں کسی قسم کی مالی کرپشن میں ملوث رہی ہے؟

    کیا یہ پارٹی کسی قسم کی دہشتگردی یا غندہ گردی میں ملوث رہی ہے یا ملوث ہے یا اسکا کوئی عسکری ونگ تھا یا ہے؟

    کیا پارٹی کے کرتا دھرتا شاہانہ زندگی گزارنے کے عادی ہیں اور اپنے ارد گرد عوام کو فاقوں کی وجہ سے خودکشیاں کرتے دیکھکر بھی اپنی عیاشیاں چھوڑنے کو تیار نہیں ہیں؟

    سوچیے، سوچیے اور خوب سوچیے کیونکہ اس ملک، اس قوم، اپنی آنے والی نسلوں اور خود اپنا مستقبل آپکے ہاتھوں میں ہے

    چند سکوں یا کسی ذاتی مفاد اور ذاتی پسند یا نہ پسند کی بنیاد پر اپنا، اپنے ملک و قوم اور اپنی آنے والی نسلوں کا مستقبل تاریک نہ کریں

    بہت شکریہ

    http://www.youtube.com/watch?v=IGy72yGGQ1k



  • This post is deleted!


  • @ mango mam

    بھائی جی

    جب انسان خلوص نیت سے ڈھونڈنے نکلتا ہے تو فرشتے تو کیا خدا بھی مل جاتا ہے

    نیت اور کوشش کی ضرورت ہوتی ہے

    اسکے علاوہ ہمیں اپنی زمہ داریوں اور ووٹ کی اہمیت کا احساس کرنے کی بھی ضرورت ہے

    نہیں ہے نا امید اقبال اپنی کشت ویراں سے

    ذرا نم ہو تو یہ مٹی بہت ذرخیز ہے ساقی



  • نہیں ہے نا امید اقبال اپنی کشت ویراں سے

    ذرا نم ہو تو یہ مٹی بہت ذرخیز ہے ساقی

    اقبال کو پتا ہوتا کے یہ مٹی کتنی خراب نکلے گی ، تو کبی یہ شعر نہ لکھتا



  • @ oblivion

    ایک باپ اپنی اولاد سے اچھی توقعات ہی وابستہ کرتا ہے

    حالانکہ وہ جانتا ہوتا ہے کہ اسکی اولاد اسکے نام کو چار چاند بھی لگا سکتی ہے اور دھبہ بھی



  • This post is deleted!


  • ایک باپ اپنی اولاد سے اچھی توقعات ہی وابستہ کرتا ہے

    خاندان بہت الگ چیز ہے، خاندان بہت کم افراد سے مل کر بنتا ہے، باپ اگر ٹھیک نہیں ہے، تو اولاد بہت کم ٹھیک ہو گی، اقبال نے یہ شعر کسی خاندان کے بارے میں نہیں لکھا، بلکے اس علاقے کے لوگوں کے بارے میں لکھا ہے جس میں وہ رہتا تھا، اقبال نے جس چیز کو نم کہا ہے، وہ جن پریوں والی کہانی ہے، اقبال کے اصل میں کہنے کا مطلب یہ تھا ، کے یہاں کی مٹی میں کوئی نم نہیں ہے، اس لئے ساقی یہ زرخیز نہیں ہو سکتی -- وہ کہ رہا ہے ، ساقی جن پریوں والی کہانی سے اپنے اپ کو آزاد کرو



  • میرا اس پوسٹ کا مقصد ہی یہی ہے کہ

    سوچیے، سوچیے اور خوب سوچیے کیونکہ اس ملک، اس قوم، اپنی آنے والی نسلوں اور خود اپنا مستقبل آپکے ہاتھوں میں ہے

    چند سکوں یا کسی ذاتی مفاد اور ذاتی پسند یا نہ پسند کی بنیاد پر اپنا، اپنے ملک و قوم اور اپنی آنے والی نسلوں کا مستقبل تاریک نہ کریں



  • This post is deleted!


  • @ oblivion

    بھائی جی

    یہ درست ہے کہ اقبال نے اس مٹی کے نہ نم ہونے کا ذکر کیا ہے لیکن وہ کبھی بھی مایوس نہیں ہوا تھا اور ہمیشہ پر امید رہا ہے

    اپنے صحرا میں بہت آہو ابھی پوشیدہ ہیں

    بجلیاں برسے ہوئے بادل میں بھی خوابیدہ ہیں



  • I think Bawa ji is right.

    If people change their attitude,the leaders will have to change their temprament as well.If people start to realize the power of their votes,leaders have to mould themself accordingly.



  • @ mango mam

    شکریہ بھائی جی

    اصل میں ہمیں اپنے رویوں کو بدلنا ہے

    اپنے حقوق کے ساتھ ساتھ اپنی زمہ داریوں کا بھی احساس کرنا ہے

    حقوق کبھی زمہ داریوں کے بغیر حاصل نہیں ہوتے

    یہی اس تھریڈ کا پیغام ہے



  • @ Zaheerabbas

    بھائی جی - آپ نے بالکل درست تجزیہ کیا ہے

    بہت شکریہ



  • اپنے صحرا میں بہت آہو ابھی پوشیدہ ہیں

    بجلیاں برسے ہوئے بادل میں بھی خوابیدہ ہیں

    باوا

    فاطمہ بنت عبدللہ ، اپ کی مٹی سے نہیںتھی ، یہ شعر اس نظم کے آخر میں ہے ، کیا اپ موڈرن لڑکیاں، وہ کام کر سکتی ہیں جو فاطمہ نے کیا..



  • @ oblivion

    بھائی جی

    فاطمہ کس مٹی سے تھی؟ کیا وہ خون مسلم نہ تھا؟

    علامہ اقبال نے ہمیشہ مسلم امہ کا ذکر کیا ہے اور مسلم امہ علاقائی لکیروں سے بالاتر ہے

    ایک ہوں مسلم حرم کی پاسبانی کیلئے

    نیل کے ساحل سے لے کر تابخا کاشغرُ



  • لیکن وہ کبھی بھی مایوس نہیں ہوا تھا اور ہمیشہ پر امید رہا ہے

    لطف مرنے ميں ہے باقي ، نہ مزا جينے ميں

    کچھ مزا ہے تو يہي خون جگر پينے ميں

    کتنے بے تاب ہيں جوہر مرے آئينے ميں

    کس قدر جلوے تڑپتے ہيں مرے سينے ميں

    اس گلستاں ميں مگر ديکھنے والے ہي نہيں

    داغ جو سينے ميں رکھتے ہوں ، وہ لالے ہي نہيں

    اقبال کی نہ امیدی )

    ;)



  • فاطمہ کس مٹی سے تھی؟ کیا وہ خون مسلم نہ تھا؟

    جس مٹی میں نم تھا، فاطمہ اس مٹی سے تھی



  • @ oblivion

    یہ مایوسی اور نا امیدی نہیں - احساس بیدار کرنے کا ایک طریقہ ہے

    اس مٹی نے بھی بہت بہادر بچیوں اور خواتین کو جنم دیا ہے

    سول سیکرٹریٹ پر پاکستانی پرچم لہرانے والی لڑکی

    فاطمہ صغرا

    بحث دوسری طرف نکل رہی ہے اس لیے واپس ٹاپک کی طرف چلتے ہیں

    :) :)



  • اگر ہمیں اپنے ووٹ کی اہمیت کا احساس ہو جائے اور ہم اسے ایمانداری اور خلوص سے اسکے مستحق کے حق میں استعمال کر سکیں تو یہ ملک و قوم کی بہت بڑی خدمت ہوگی



  • ایک بیٹی کا خوبصورت پیغام - سینیٹ کی ایک سیٹ پر بکنے والے اعتزاز احسن کے نام

    .

    .

    http://www.youtube.com/watch?v=EChbF7UUnTU

    .

    جیت ہمارا مستقبل ہے - جیت ہمارا مستقبل ہے

    .

    .

    اے خاک نشینو اٹھ بیٹھو، وہ وقت قریب آ پہنچا ہے

    جب تخت گرائے جائیں گے، جب تاج اچھالے جائیں گے

    اب ٹوٹ گریں گی زنجیریں اب زندانوں کی خیر نہیں

    جو دریا جھوم کے اُٹھے ہیں، تنکوں سے نہ ٹالے جائیں گے

    کٹتے بھی چلو، بڑھتے بھی چلو، بازو بھی بہت ہیں، سر بھی بہت

    چلتے بھی چلو، کہ اب ڈیرے منزل ہی پہ ڈالے جائیں گے

    اے ظلم کے ماتو لب کھولو، چپ رہنے والو چپ کب تک

    کچھ حشر تو ان سے اُٹھے گا۔ کچھ دور تو نالے جائیں گے