ھمارے شریفوں اور شریف زادوں کی لوٹ کو زیرے بحث مت لاؤ. چودری نثار



  • http://www.topstoryonline.com/nisar-imran-from-friends-to-foe

    سیاست: ایچی سن کے دوست اب ’جانی دشمن‘

    Published on 10. Aug, 2012

    اسلام آباد (مریم حسین) مسلم لیگ نواز کے مرکزی رہنماء اور قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف چوہدری نثار علی خان تحریک انصاف کے عمران خان پر زبانی حملوں کا سلسلہ جاری رکھے ہوئے ہیں، جس سے دونوں پارٹیوں میں تلخی میں مزید تیزی آگئی ہے اور ایسا لگتا ہے کہ ایچی سن کالج کے زمانے کے یہ دنوں دوست اب ایک دوسرے کے ازلی دشمن ہیں۔ چوہدری نثار علی خان اور عمران خان دونوں ایچی سن کالج میں کرکٹ کھلیتے رہے ہیں۔ نثار اس ٹیم کے کپتان تھے جس میں عمران خان کھلیتے تھے۔ تاہم چوہدری نثار علی خان نے دوستی کی روایت کو توڑتے ہوئے دھمکی دی تھی کہ وہ عمران خان کے ذاتی راز افشاں کر دیں گے جو انہیں دوست کی حیثیت سے معلوم ہیں۔

    عمران خان نے بھی جوابی دھمکی دی تھی جس کے بعد اب چوہدری نثار نے جمعرات کو پریس کانفرنس کر کے ایک دفعہ پھر ماحول کو گرما دیا ہے۔ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے چوہدری نثار کا کہنا تھا کہ بہتر ہوگا کہ عمران خان شوکت خانم ہسپتال کے پیچھے چھپنے کی بجائے حقائق کا سامنا کریں۔ عمران خان کے بارے میں معلوم ہوا ہے کہ وہ انگلینڈ سے آئے ہوئے اپنے بچوں کے ساتھ چھٹیاں گزارنے سکردو گئے ہوئے ہیں۔ اس سے پہلے چوہدری نثار نے عمران خان کو کہا ہے کہ یا تو وہ پاکستان مسلم لیگ کے خلاف لگائے گئے سارے الزامات کو عدالت لے جائیں یا پھر میڈیا ٹرائل کے لئے تیا ر ہو جائیں۔

    چوہدری نثار نے پہلی دفعہ عمران خان کو صدر زرداری اور رحمن ملک سے ملاتے ہوئے کہا کہ انہوں نے کوئی نئی بات نہیں کہی ہے بلکہ جو کچھ وہ کہہ رہے ہیں وہ اس سے پہلے پیپلز پارٹی کہتی رہی ہے۔ ان کا کہنا تھا کا کہ عمران خان کے 11 الزامات وہی ہیں جو رحمان ملک کے گھڑے ہوئے ہیں، عمران خان کا ایجنڈا وہی ہے جو صدر زرداری اور رحمان ملک کا ہے۔

    اسلام آباد میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے چوہدری نثار علی خان کا کہنا تھا کہ عمران خان الزامات میں پہل کرتے ہیں لیکن پھر جواب دینے سے بھاگ جاتے ہیں۔ نواز شریف کے بچوں کے سعودیہ اور برطانیہ میں اثاثے پیش کرنے کیلئے تیار ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ اگر عمران خان سچے ہیں تو جو عدالت پسند ہو وہاں درخواست دیں کہ کمیشن بنایا جائے، کمیشن کا سربراہ موجودہ جج یا ریٹائرڈ جج ہو یہ عمران خان پر چھوڑتے ہیں۔

    پاکستان تحریک انصاف کے ذرائع کا کہنا ہے کہ عمران خان سکردو سے واپس آکر خو د ہی چوہدری نثار کی پریس کانفرنس کا جواب دیں گے۔ ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ چوہدری نثار نے پریس کانفرنس کا یہ وقت اس لیے چنا ہے کیونکہ وہ جانتے تھے کہ عمران خان فوراً پریس کانفرنس کر کے یا کسی ٹیلی ویزن چینل پر آکر جواب نہیں دے سکیں گے۔ پاکستان تحریک انصاف کے ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ تحریک کا کوئی دوسرا سینئر رہنما اس الزام تراشی کے اس کھیل کا حصہ نہیں بننا چاہتا۔

    چوہدری نثار کا کہنا تھا کہ نواز شریف کے بچے جو کاروبار کررہے ہیں اس کا جواب نواز شریف نہیں بچے ہی دیں گے، نواز شریف نے مے فیئر فلیٹس کے معاملات نہیں چھپائے، لندن میں فلیٹ یا محل لینا مشکل نہیں، 10 سے 20 فیصد بیعانہ دے کر باقی موگیج سے فلیٹ یا محل لیا جاسکتا ہے، 20سال ہوگئے، نواز شریف ابھی تک قرضہ ادا کررہے ہیں. چوہدری نثار نے مزید کہا کہ عمران خان نے شیخوپورہ میں 70 لاکھ کی زمین خریدی، ٹیکس ریٹرن میں اس کا ذکرتک نہیں، عمران خان کو بہت سے سنگین سوالات کا جواب دینا چاہیے، باہر سے جو پیسہ آیا عمران خان کے ٹیکس ریٹرن میں اس کا بھی کوئی ذکر نہیں۔

    انہوں نے کہا کہ بچوں کا کاروبار بحث میں نہیں آنا چاہئے، ہم عمران خان کے بچوں کی حدود پر اعتراض نہیں کرتے، نواز شریف کے بچوں کے سعودیہ اور برطانیہ میں اثاثے پیش کرنے کیلئے تیار ہیں، اب یہ بحث ختم ہونی چاہئے، عمران خان کو بھاگنے نہیں دیں گے ۔

    چوہدری نثار نے کہا کہ عمران خان کو رحمان ملک کے الزام کا سہارا لے کر میڈیا ٹرائل نہیں کرنے دیں گے، وہ سچے ہیں تو مل کر جو عدالت پسند ہو وہاں درخواست دیں کہ کمیشن بنایا جائے، کمیشن موجودہ جج یا ریٹائرڈ جج پر مشتمل ہو یہ عمران خان پر چھوڑتے ہیں، یہ الزامات پریس کانفرنس سے حل نہیں ہوسکتے۔

    انہوں نے کہا کہ جس نے ساری زندگی ٹیکس چوری کیا وہ 90 دن میں ٹیکس چوری کیسے ختم کرے گا، عمران خان قوم کا وقت ضائع نہ کریں، عوام کا مسئلہ یہ نہیں، لوڈشیڈنگ اور دیگر مسائل ہیں۔ چوہدری نثار کاکہنا تھا کہ ریمنڈ بیکر نے اپنی کتاب میں آصف زرداری اور جرنیلوں پر بھی الزامات لگائے، عمران خان نے ان کا ذکر نہیں کیا، عمران خان قوم کے سامنے حقائق رکھیں۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان نے اخلاقی اقدار کو جو ملیا میٹ کیا اس کی مثال نہیں ملتی، عمران خان کی ’ہمارے خاندان کے بارے میں باتیں بہکی بہکی تھیں، غصے سے آدمی بڑا لیڈر نہیں بنتا، بڑا لیڈر حقائق سے بنا جاتا ہے۔‘

    چوہدری نثار کا کہنا تھاکہ تمام سیاسی جماعتوں کو ملکی مسائل پر توجہ دینی چاہئے، ایک جماعت کا کام صرف الزام تراشی ہے، عمران خان نے کہا تھا چوہدری نثار کے الزامات کو عدالت میں چیلنج کروں گا، لگتا ہے عمران خان کوسانپ سونگھ گیا، 24 گھنٹے بعد عمران خان نے اپنے چیلنج کا بھی ذکر نہیں کیا۔

    سیاسی ذرائع کہتے ہیں کہ یوں دن گزرنے کے ساتھ ساتھ نواز لیگ اور تحریک انصاف جن پر دباؤ تھا کہ وہ پیپلز پارٹی کے خلاف متحدہ سیاسی محاذ بنا لیں وہ اب ایک دوسرے کے گلے کاٹنے پر اتر آئی ہیں۔ بات اب سیاسی سے بڑھ کر ذاتی حملوں پر آگئی ہے اور دونوں پارٹیوں کے لیڈرز الیکشن کے دن قریب آنے کے ساتھ ساتھ ذاتی حملوں کی وجہ سے تلخی کا شکار ہوتے جارہے ہیں اور ان دونوں پارٹیوں کے درمیان کسی ممکنہ الائنس کی امیدیں دم توڑ رہی ہیں۔



  • Shreefoon ne Pakistan ke 4 billions dollars loot kar, apni olaadoon ke liay UK, Saudi Arbia, USA aur dusaray mulkoon mein business empires khari kar di hein. Aur Ch. Nisar jesay bezameer log Imran ko keh rahay hein, keh hamaray masoom Sharif Zadoon ke business aur dolat ko zere behs maat laao.

    Lanat ha esay ghatia siayasi leadroon par, jo Asia ki sab se bari daccu sharif family ko defend kar rhay hein.

    Lagta ha, Ch. Nisar Noon league ka nia Shiekh Rashid banay ki koshesh kar raha ha.





  • Govt. forms committee to make President, PM, Jurnails and judges to declare their assets annually.

    http://www.bbc.co.uk/urdu/pakistan/2012/08/120815_assets_committee_zz.shtml