Human Rights Watch pushes Pakistan to 'urgently' protect Shias



  • Pakistan should “urgently act” to protect Shia Muslims from rising sectarian attacks that have killed hundreds this year, Human Rights Watch said Thursday.

    At least 320 Shias have been killed in targeted attacks this year across Pakistan, including more than 100 in Balochistan, the majority from the Hazara community, the US-based group it said in a statement.

    “Deadly attacks on Shia communities across Pakistan are escalating,” Brad Adams, Asia director at Human Rights Watch, said in the same statement.

    “The government’s persistent failure to apprehend attackers or prosecute the extremist groups organising the attacks suggests that it is indifferent to this carnage,” Adams said.

    The rights watchdog said militant groups such as the “ostensibly banned” Lashkar-e Jhangvi (LeJ) had operated with “widespread impunity” across Pakistan while law enforcement officials looked the other way.

    Adams said the arrest last month of of LeJ leader Malik Ishaq, who has been accused of killing some 70 people, was “an important test for Pakistan’s criminal justice system”.

    Some extremist groups are known to be “allies” of the Pakistani military, its intelligence agencies, and affiliated paramilitaries, such as the Frontier Corps, HRW said.

    On September 1, four gunmen riding two motorbikes intercepted a bus near the Hazarganji area of Quetta, pulled five Shia vegetable sellers off the vehicle and shot them dead.

    On August 30, unidentified gunmen shot dead Shia judge Zulfiqar Naqvi along with his driver and police bodyguard.

    Sectarian conflict has left thousands of people dead since the late 1980s.

    In one of the bloodiest recent attacks, on August 16 gunmen dragged 20 Shia travelers off a bus and killed them at point blank range in northern Pakistan.

    “Pakistan’s government cannot play the role of unconcerned bystander as the Shia across Pakistan are slaughtered,” Adams said.



  • Didn't somebody tell Mr. Brad Adams our primary concern is how Muslims are treated in Burma, Palestine, India and else where on globe. If they can wear hijab in France and Swedan. The last thing we need to worry about is how they are being massacred within our frontiers.

    :)



  • شیرازی جی

    بہت بری بات ہے ، آپ محترم بریگیڈئر علی صاحب کی جیل میں اے کلاس والے کنسرن یعنی تشویش کو بھول گئے ہے

    ویسے محترم علی صاحب نے اپنا حال پوچھنے پر آپ کیلئے نیک تمناؤں کا اظہار کیا ہے

    ف ج



  • @FJ Saab

    So you are in touch with Brig. Saab? Did you take up the responsibility of feeding Brig. Saab as Queen seems to be doing OK for next few months?

    :)



  • شیرازی جی

    "So you are in touch with Brig. Saab"

    کیا پتا میں ہی بریگیڈئر علی ہوں

    ف ج



  • @FJ Saab

    I know you are barely cyber lion ... you can't plan to steal F-16 to bomb over GHQ ...

    :)



  • شیرازی جی

    اس پٹھان سے تو سودا سی ١٣٠ کا ہوا تھا لیکن کمبخت عین موقع پر دغا دے گیا اور ایف سولہ کی پیشکش کرنے لگا جو کہ مجھے قبول نہ تھی

    اسی لئے سارا منصوبہ ناکام ہوا

    آئیندہ سے وزیرستان کے کسی پٹھان پر بھروسہ نہیں کروں گا

    ف ج



  • yeh tou honaa hee thaa.

    Ever since Zardari became friends with Iran, shia killing ramped up here.



  • جب کوڑھیوں کی حکومت لوٹ مار کرکے سوئس اکاونٹس بھرنے میں مصروف ہو اور عابدی جیسے کوڑھی کتے اس کرپشن کو چھپانے کے لیے پریس کانفرس بلا کر قومی میڈیا اور سیاسی ویبسایٹس پر بھونک رہے ہوں تو شیعوں اور اقلیتوں کا تحفظ کون کرے گا؟

    .

    .

    .

    .

    وزارت چھترول - اسلامی جمہوریہ پی کے پولیٹکس

    ^^^^^^^^ :wink: :wink: ^^^^^^^^







  • Fazlur rehman said an interesting thing.

    He said government and agencies are involved in sectarian killings to further their agenda...

    womeone should follow up with him..what agenda???



  • More than 320 Shias killed in Pakistan this year in wave of sectarian attacks

    PAKISTAN’S government must do more to protect its minority Shia population, according to human rights campaigners, in a year which has already seen more than 320 killed in a wave of targeted attacks.

    http://www.telegraph.co.uk/news/worldnews/asia/pakistan/9525062/More-than-320-Shias-killed-in-Pakistan-this-year-in-wave-of-sectarian-attacks.html

    ہیومن رائٹس واچ کے مطابق بعض شدت پسند گروہ پاکستانی افواج، خفیہ ایجنسیوں اور اس سے وابستہ نیم فوجی دستوں مثلاً فرنٹیئر کور کے معاون سمجھے جاتے ہیں۔

    http://urdu.dawn.com/2012/09/06/pakistan-protect-shia-hrw/

    Punjabi-Fauji-Molvi nexus is behind most of Pakistan's problems. How long can we afford to avoid the facts?



  • عراق اور افغانستان پر قبضے کی وجہ سے جو کھربوں ڈالر کا اضافی بوجھ امریکی معیشت پر پڑ رہا ہے، اس سے امریکی معیشت دیوالیہ ہونے کے قریب پہنچ گئی ہے۔ امریکی منصوبہ سازوں کے اعصاب پر یہ خوف سوار ہے کہ کہیں دنیا کے مایوس اور سرمایہ دارانہ استحصال سے متنفر عوام دوبارہ سوشلسٹ نظام کی طرف پلٹ نہ جائیں۔ یہی وہ خوف ہے جس نے امریکی منصوبہ سازوں کو پریشان کر رکھا ہے۔ یہ بات اب یقینی ہوتی جا رہی ہے کہ دنیا اب سرمایہ دارانہ استحصال کو مزید برداشت کرنے کے لیے تیار نہیں۔ اس لیے کسی نہ کسی بہتر اور منصفانہ نظام کی طرف دنیا کو آنا ہی پڑے گا۔ فی الوقت ہم اس ممکنہ متبادل پر بات نہیں کریں گے لیکن اس سازش پر ضرور نظر ڈالیں گے جو ملک کے دانشورانہ حلقوں میں شدّت سے محسوس کی جا رہی ہے اور پرنٹ اور الیکٹرانک میڈیا میں دیکھی جا رہی ہے۔

    جس شاطرانہ اور عیّارانہ مہم کی طرف ہم نے اشارہ کیا ہے، وہ ہے لبرل ازم، روشن خیالی اور سیکولر ازم کے خلاف تیزی کے ساتھ آگے بڑھتی ہوئی مہم جو اب ایک زبان سے کئی زبانوں تک ایک قلم سے کئی قلموں تک ایک چینل سے کئی چینلوں تک آ گئی ہے۔ ہو سکتا ہے اس مہم میں شامل لوگوں اور اداروں میں کچھ سادہ لوح لوگ بھی ہوں لیکن ان میں اکثریت ایسے اوتاروں کی نظر آ رہی ہے جو امریکی سرپرستی میں یہ مہم چلا رہے ہیں اور افسوس کی بات یہ ہے کہ اس عوام دشمن مہم کو عوام میں پذیرائی دِلانے کے لیے اس پر مذہب کا مقدس غلاف چڑھایا جا رہا ہے۔

    لاکھوں روپوں میں کھیلنے والے ان عاقبت نا ا ندیش مہم بازوں کا مقابلہ چند ہزار ماہانہ کمانے والے اہل دانش اہل قلم کر رہے ہیں۔ یہاں اس حوالے سے اس سازش کے اصل حصّے کی طرف توجہ مبذول کرنا ضروری ہے جسے امریکا اور سرمایہ دارانہ نظام کے منصوبہ ساز اسی طرح استعمال کرنا چاہتے ہیں، جس طرح انھوں نے روس کو افغانستان سے نکالنے کے لیے کیا تھا۔ امریکی ماہرین معاشیات جانتے ہیں کہ دنیا میں کوئی ایسا معاشی، سیاسی اور سماجی نظام موجود نہیں جو سرمایہ دارانہ نظام کا ایک بہتر متبادل بن سکے، سوعوام کے ایک معقول حصّے کو ذہنی انتشار میں مبتلا کرنے کے لیے لبرل ازم، روشن خیالی اور سیکولر ازم کے خلاف گھٹیا زبان استعمال کرنے کے ساتھ ساتھ شدّت پسندوں کی طرف سے اسلامی نظام کے نفاذ کا پروپیگنڈا کروا رہے ہیں۔

    **

    امریکی منصوبہ ساز اس حقیقت سے اچھی طرح واقف ہیں کہ اپنے بے گناہ لاکھوں دینی بھائیوں اور ہم قوموں کو بارودی گاڑیوں اور خودکش حملوں کے ذریعے بہیمانہ طریقوں سے قتل کرنے والوں کی پٹاری میں کوئی ایسا نظام موجود نہیں جو سرمایہ دارانہ نظام کا ایک ایسا بہتر متبادل بن سکے، جسے عوام قبول کریں اور وہ سرمایہ داری کے لیے خطرہ بن سکے۔ اس پس منظر میں یہ بات کہی جا سکتی ہے کہ کیا روس کو افغانستان سے نکالنے والے شدّت پسند ایک بار پھر اپنی مرضی اور رضا سے امریکی مفادات کے آلۂ کار بن رہے ہیں؟

    **

    اب آئیے ذرا ان الزامات کی طرف جن کے حوالے سے یہ پروپیگنڈا مہم چلائی جا رہی ہے، پہلا شکار لبرل ازم، دوسرا ترقی پسندی، تیسرا سیکولر ازم، لبرل کی اصطلاح ان لوگوں پر استعمال کی جاتی ہے جو رجعت پسندی اور ترقی پسندی کے درمیان کھڑے ہوتے ہیں، یعنی اعتدال پسند، ان کا ایک پیر ماضی میں ہوتا ہے، دوسرا حال میں۔ اس حوالے سے دیکھا جائے تو پاکستان کی وہ تمام جماعتیں جو مذہبی سیاست نہیں کرتیں وہ سب لبرل ہیں۔ اس کے بعد ترقی پسندی کی اصطلاح آتی ہے جس کی مختصراً تعریف ’’ماضی کے تجربات کی روشنی میں حال اور مستقبل کا تعیّن کرنا ہے۔‘‘

    ترقی پسندی کا مطلب سائنسی فتوحات کو تسلیم کرنا زندگی کی حقیقتوں کا معروضی تجزیہ کر کے انھیں عوام کے بہتر مستقبل کے لیے استعمال کرنا ہے۔ کوئی ترقی پسند کسی نظریے کو نہ حرفِ آخر سمجھتا ہے نہ کسی نظریے کو ازلی ابدی سمجھتا ہے جب کہ رجعت پسند ماضی کو حال اور مستقبل پر بغیر اس کی افادیت کے مسلط کرنا اور اپنے نظریے کو حرفِ آخر اور ابدی گردانتا ہے۔ رجعت پسند اپنے نظریے کو بالاتر اور دوسروں کے نظریے کو بدتر سمجھتا ہے۔ آخری مسئلہ سیکولر ازم کا ہے۔

    سیکولر ازم کا مقصد ہر مذہب کا احترام اور آزادی کے علاوہ مذہب کو سیاست کی گندگیوں سے دور رکھنا ہے۔ ہندوستان کی ہزار سالہ تاریخ میں سوائے اورنگ زیب کے باقی تمام مسلم حکومتیں سیکولر رہی ہیں۔ دنیا کے 57 مسلم ملکوں میں سے تقریباً 55 ملک اس اعتبار سے سیکولر ہیں کہ انھوں نے مذہب کو سیاست سے الگ رکھاہے۔ سیکولر انسان کسی حوالے سے مذہب مخالف نہیں ہوتا کیونکہ وہ ہر مذہب کا احترام کرتا ہے اور مذہبی آزادیوں کا حامی ہوتا ہے۔

    http://www.express.pk/story/20835/

    He seems to have a point and kind of explains why mullahs are supported by US in Muslim countries; mullahs will never be able to bring a system that can address the challenges of 21st century and beyond, hence are a no real threat to the west. Apart from killing a few innocent people in their own countries they can't do much else.



  • "a system that can address the challenges of 21st century and beyond, hence are a no real threat to the west."

    bunch of useless bakwaas. you seems like a school goin' wannabee qadiani kid



  • A very good propaganda in favour of secularism by Yahaya.



  • He seems to have a point and kind of explains why mullahs are supported by US in Muslim countries; mullahs will never be able to bring a system that can address the challenges of 21st century

    ========

    ملاؤں کو امریکہ کیوں سپورٹ کر رہا ہے

    اگر ملا کوئی نظام لا ہی نہیں سکتے تو پھر پریشانی کس بات کی، یہ اسلحہ/میڈیا وار کس لئے



  • توہين رسالت کےنام پہ بيگناہوں کو پھٹر کرنے اور پورنوگرافی ميں عالمی مقام حاصل کرنے کے بعد مومنين کا نيا شوق

    Moonshine flourishes in unlikely areas of Pakistan

    ISLAMABAD, Pakistan — There is just one legal brewery in all of Pakistan, where the Muslim-majority population has been prohibited from drinking alcohol for 35 years. Yet the alcohol business is thriving in unlikely places, including Peshawar, the religiously conservative metropolis that abuts Pakistan’s tribal frontier.

    After a lull caused by a militant crackdown, hundreds of small distilleries are active again in Peshawar and across the northwestern province of Khyber Pakhtunkhwa. None is legal.

    http://www.washingtonpost.com/world/asia_pacific/moonshine-flourishes-in-unlikely-areas-of-pakistan/2012/09/04/b68a61b4-f49e-11e1-892d-bc92fee603a7_story.html



  • اسے کہتے ہیں کتے والی ہونا

    .

    .

    http://www.youtube.com/watch?v=jeH7ZsTbg_M

    .

    .

    خدمت میں پیش پیش

    وزارت چھترول - اسلامی جمہوریہ پی کے پولیٹکس