Quaid E Azam was a dictator



  • قائداعظم ڈکٹیر تھے

    آج پاکستان پیپلز پارٹی کی ممبر صوبائی اسمبلی خیبر پختونخواہ، فائزہ ریشد نے ایک ایسا انکشاف کیا ہے کہ سر دھننے کو جی چاہ رہا ہے، کیونکہ بقول محترمہ کے پاکستان کا سب سے پہلے ڈکٹیٹر قائداعظم محمد علی جناح تھے، کیونکہ انہوں نے سندھ اسمبلی جو کہ عوام کے ووٹوں سے منتخب ہوکر آئی تھی، اسے توڑ کر اپنے انگلش میں ڈکٹیٹر اور اردو میں جابر ہونے کا ثبوت دے دیا۔ واہ کیا انکشاف ہے، موصوفہ نے تاریخ کے ان چھپے ہوئے اوراق کو کھول دیا۔ جو کہ اس سے قبل بند تھے۔ خیر جہانتک تعلق ہے محترمہ کا ، محترمہ کے آبائی علاقے کا، اور محترمہ کی سیاسی وابستگی کا، تو محترمہ کسی بھی طریقے سے اس کسوٹی پر پوری نہیں اترتی، کہ محترمہ کو ایک صیح الدماغ اور باشعور پاکستانی تصور کیا جاسکے۔ کیونکہ محترمہ کا تعلق صوبہ سرحد کے ایک پٹھان گھرانے سے ہے، اوربلا معذرت صوبہ سرحد یا موجودہ چوں چوں کا مربہ خیبر پختونخواہ میں ایسے ضمیر فروش لوگ ماضی میں اور اب بھی موجود ہیں، جو کہ قائداعظم کو قومی رہنما اور پاکستان کو پاکستان نہیں مانتے۔ ان کے نزدیک تخلیق پاکستان ایک غلط قدم تھا اور ہے، اور اس کا ثبوت یہ لوگ کافی مواقع پر دے بھی چکے ہیں، مثال کے طور پر خان عبدالغفار خان اور ولی خان کی افغانستان میں دفن ہونے کی خواہش، خان عبدالغفار خان کا مرتے دم تک انڈین کانگریس کا رکن رہنا، اور باقاعدگی سے کانگریس کے یوم تاسیس کی تقریبات میں شرکت کے لیئے بھارت یاترا کرنا ۔ اور جہانتک تعلق ہے محترمہ آپ کے آباؤاجداد کا، ان کے سیاسی کردار اور ہمدردیوں کا، تو وہ بھی کسی سے ڈھکی چھپی نہیں، سب سامنے ہیں۔ اب میں ذرا پاکستان پیپلز پارٹی کے بانی ذوالفقار علی بھٹو کی طرف آجاتا ہوں، تو کیا مرحوم ایک انتہائی جمہوری شخصیت تھے، اور موصوف نے اپنی ساری زندگی میں جمہوری اقدار کا تحفظ کیا، اور جمہوریت کو پروان چڑھایا گیا۔ اور اگر ایسا ہی تھا، تو دلائی کیمپ کیا تھا؟ شاہی قلعے کے مہمانوں کے کیا نام تھے، لیاقت باغ راولپنڈی میں فائرنگ کا ذمہ دار کون تھا۔ مزید آگے چلتے ہیں، اس وقت کی عوامی نیشنل پارٹی پر پابندی کس نے اور کیوں لگائی، وہ بھی تو عوام کے نمائندے تھے، اور وہ بھی عوام کے ووٹوں سے منتخب ہوکر اسمبلی میں پہنچے تھے۔ بلوچستان اور سرحد اسمبلی ( موجودہ خیبر پختونخواہ ) 1973 میں تحلیل کی گئیں، وہ کس کا دور تھا، نیز ان تحلیل شدہ اسمبلیوں کے ممبران کس کے ووٹوں سے منتخب ہوکر ایوان میں پہنچے تھے۔ یہ بھی ذوالفقار علی بھٹو کا ہی دور تھا، جس میں دو چیف منسٹرز ، دو گورنرز اور چوالیس ممبر قومی اور صوبائی اسمبلی گرفتار کیئے گئے۔ نہیں فائزہ جی یہ سب کچھ پیپلز پارٹی کے مائی باپ ذوالفقار علی بھٹو (مرحوم) نے کیا تھا۔ وہ تو جمہوریت کا بہت بڑا پیکر تھا، وہ تو جمہوری اقدار کا پابند تھا۔ یہ میں نہیں کہہ رہا، یہ وہ بیوہ کا رونا ہے، جو کہ پیپلز پارٹی والے ہر اس وقت روتے ہیں، جب یہ مکمل طور پر ناکام ہوجاتے ہیں، اپنی نالائقیوں اور بددیانتیوں کو چھپانے میں مکمل طور پر ناکام ہوجاتے ہیں۔ خیر یہ ہی المیہ ہے، اور اس کی ذمہ دار بھی پیپلزپارٹی کی قیادت اور اس کے سرکردہ لیڈر صاحبان ہیں۔ کیونکہ اس کا ورکرجو کہ صرف اس وقت یاد آتا ہے جب کوئی جلوس نکالنا ہو، نعرے لگانے ہوں، یا پھر ووٹ لینا ہو۔ تو اس وقت یہ ورکر یاد آتے ہیں۔ ورنہ فوائد اور مال تو قائدین کے لیئے اور دھکے ورکر کا مقدر ہوتا ہے۔ اور جہاں تک تعلق ہے صیح ہاتھوں میں پارٹی کی باگ دوڑ کا تو اس کا زوال ذوالفقار علی بھٹو کی پھانسی کے بعد سے ہی ہوگیا تھا، جب خاندان میں بھائی بہن کے دوران پارٹی قیادت کے مسلئے پر رسہ کشی شروع ہوگئی۔ اس کے بعد بینظیر بھٹو جو کہ ابھی تک غیر شادی شدہ تھی، اس نے اپنے کچھ لوگوں کو اپنے بھائیوں کی کردار کشی پر لگا دیا،اور اس کے ساتھ ہی اپنا دوسرا ٹارگٹ عمر کی اس حد تک پہنچنا تھا، جہاں کہ پاکستان کے قانون کے تحت الیکشن لڑنا اور اقتدار کے ایوانوں میں پہنچا جا سکے۔ اور جب عمر کا یہ حصہ آیا، تو ایک بددیانت شخص آصف علی زرداری سے شادی کرلی۔ مگر نام میں بھٹو سیاسی مقاصد کے تحت لگائے رکھا۔ یا یہ کہنا زیادہ بہتر ہوگا کہ خود تو زرداری نہ بن سکی، مگر مفاد پرست شوہر کو بھٹو ضرور بنادیا یہ پیپلز پارٹی کی کیسی جمہوریت اور جمہوری اقدار تھیں کہ نصرت بھٹو( مرحومہ) کو اپنے بیٹوں سے پرے رکھا، اپنے پوتا پوتیوں سے ملنے سے محروم رکھا۔ اور جہاں تک جمہوریت اور اس پر عمل درآمد کا تعلق ہے، تو پیپلز پارٹی میں عہدوں کی تقسیم کا عمل بذریعہ پارٹی الیکشن ہے، یا بذریعہ پسند نا پسند ہے۔ فائزہ جی پہلے جمہوریت کے معنی تو سمجھ لو، اور اس کو پارٹی میں نافذ بھی کردو، اس کے بعد کون جابر یا ڈکٹیٹر ہے، اس کا تعین کرنا۔ بلا معذرت تمہاری طرح کے ٹکے ٹکے لوگ اگر جمہوریت اور ڈکٹیٹر کی تعرف کریں گے تو پھر گندگی ہی پھیلے گی۔



  • Pakistan4all

    I think u r talking of NWFP assembly not sindh assembly because QA never dissolved sindh assembly. It was NWFP assembly which was dissolved around 21st Aug 1947.

    Leavinng aside what this lady said , there are some genuine questions around what happened than.

    In 3rd of Jun 1947 plan , For all the pronvinces (which came to pakistan), the mandate was given to pronvicial assemblies to decide whether they want to join pakistan or not

    a) Sindh assebly was to decide whether it wants to join pak in full or not

    b) Bengal and Punjab assembly had to decide whether they want to join pak in full or partially and both assemblies decided that provnice be divided on the basis of population religion which gave rise to redcliff boundary commision.

    c) Balochistan was not a pronvice then and hence it was left to Quetta municipality and Baloch Jirga to decicde

    But , in case of NWFP

    the NWFP assembly was considered infected with some disease and altogether a different mechanism of referandum was devised for this pronvince. Surposh led government of Dr.Khan Sahib bycotted this on the plea that why not this mandate is given to PA as it was given to other assemblies. It was also one of the reasons that Khan Abdul Ghaffar Khan was not happy with Congress that it had accepted the Jun 3 Plan with this conditions and left the NWFP masses totally in limbo.

    To cut story short , it remains a question , why NWFP assembly (which was elected in same elections of 1946) wasn't given mandate to decide the future of pronvice.



  • Jus to add on what u said about bhutto , i totally agree that he was never a democrat or constituionalist .



  • pakistan4all jee

    "بلا معذرت تمہاری طرح کے ٹکے ٹکے لوگ اگر جمہوریت اور ڈکٹیٹر کی تعرف کریں گے تو پھر گندگی ہی پھیلے گی"

    بھائ جی - میرا خیال ہے کہ ہماری تعلیم و تربیت اسطرح ہوی ہے کہ ہمارے ذہن آلودہ ہیں - ہم اپنے اور اپنے ہمنواوں کے علاوہ کو ہر ایک کو حقیر سمجھتے ہیں - ہم میں برداشت نام کی کوئ چیز موجود نہیں - ان چند چیزوں کی وجہ سے گندگی تو بہت پہلے سے پھیل چکی ہے جو ھمیں نظر تو آتی ہے لیکن ہم گندگی کو گندگی ماننے کو تیار نہیں

    What is the harm to discuss on merit if Quaide Azam was dictator or not?



  • کیونکہ بقول محترمہ کے پاکستان کا سب سے پہلے ڈکٹیٹر قائداعظم محمد علی جناح تھے، کیونکہ انہوں نے سندھ اسمبلی جو کہ عوام کے ووٹوں سے منتخب ہوکر آئی تھی، اسے توڑ کر اپنے انگلش میں ڈکٹیٹر اور اردو میں جابر ہونے کا ثبوت دے دیا۔ واہ کیا انکشاف ہے،

    ہا ہا ہا ہا ہا



  • ان محترمہ کو تو یہ بھی علم نہیں ہے کہ **سرحد اسمبلی کو قائد اعظم نے بالکل نہیں توڑا. یہ اسمبلی انیس سو اکاؤن میں قائد اعظم کی وفات کے تین سال بعد توڑی گئی

    **

    خدائی خدمتگار کانگریس کے حامی تھے اور صوبہ سرحد کا الحاق پاکستان کی بجائے انڈیا کے ساتھ چاہتے تھے

    کانگریس، مسلم لیگ اور حکومت کی رضا مندی سے صوبہ سرحد کے لوگوں کی رائے معلوم کرنے کی غرض سے ریفرنڈم کروایا گیا

    اس ریفرنڈم میں ننانوے فیصد لوگوں نے پاکستان کے حق میں اور صرف ایک فیصد نے انڈیا کے حق میں فیصلہ دیا تھا

    ریفرنڈم کے نتایج کے بعد اسمبلی توڑ کر نئے الیکشن کروانا ضروری تھا تاکہ لوگوں کے صحیح نمایندے منتخب ہو سکیں

    سرحد اسمبلی کو قائد اعظم نے بالکل نہیں توڑا. یہ اسمبلی انیس سو اکاؤن میں قائد اعظم کی وفات کے تین سال بعد توڑی گئی

    ہاں ڈاکٹر خان کی حکومت کو ڈسمس کیا تھا کیونکہ اس نے پاکستان سے وفا داری کا حلف اٹھانے سے انکار کر دیا تھا



  • Pagal kee bachee.

    Iss kaa baap hogaa dictator, iss hee liyay aisay namoonay paidaa keay hein.



  • ب س بید

    جیے بلال بھٹو



  • None of my dear friends has tried to answer question i raised that why NWFP was not mandated to decide about the future of NWFP as other pronvicnial assemblies were ?



  • شریف آدمی

    کیا پنجاب کی اسمبلی کو ایسا کرنے کی اجازت دی گئی تھی؟

    کیا آپ بھول گئے ہیں کہ پنجاب کی تقسیم کے لیے بندری کمیشن قائم کیا گیا تھا؟



  • Yes, it was punjab assembly which decided that punjab would be divided.

    Simliarly , bengal assembly decided about the division of bengal.

    And Sindh assembly decided the future of Sindh



  • One more thing that we should consider that if we justify the dismisasal Khan sahib majority government in 1947 by an elected executive , we shouldn't criticize

    a) Yahya Khan's order to disqualify majoirty party AL

    b) Bhutto's orders to dismiss Mengal's government.

    c) NS orders to suspsend Sidnh assembly.

    Should we ?



  • پنجاب کی تقسیم کا فیصلہ پنجاب اسمبلی کا نہیں بلکہ کانگریس، مسلم لیگ اور حکومت کا فیصلہ تھا اور اسی طرح صوبہ سرحد میں ریفرنڈم بھی مشترکہ فیصلہ تھا



  • شریف آدمی

    کوئی کام کی بات کرو

    ایک حکومت ملک سے وفاداری کا حلف لینے پر تیار نہیں اور ریفرنڈم میں عوام اسے مسترد کر چکی ہے تو اسے ختم کرنے کا جواز ہے یا نہیں؟



  • http://en.wikipedia.org/wiki/Partition_of_Bengal_(1947)#The_partition

    Above link stipulates the process followed in bengal.



  • sharif bhai bawa jee wiki ko nahi mantay



  • شریف آدمی

    میں نے پنجاب کی بات کی ہے

    :) :)

    بنگال پہلے سے ہی تقسیم تھا اور صرف سلہٹ کو ریفرنڈم سے ایسٹ یا ویسٹ بنگال سے ملنا تھا



  • Bawa jee

    First question is why referendum was required in NWFP , NWFP assembly mein keeray parey howey thay ?

    Secondly , Dr.Khan sahib had majoirty in the NWFP assembly , a mandate given by the masses to represent them for next 5 years. Had that manadate expired ?



  • Bawa jee,

    I m finding the link for punjab as well. IT was the same process followed in both punjab and bengal.