سنو سنو بریکنگ نیوز سنو



  • ایس پی سی آئی ڈی کوئٹہ طارق منظور بمعہ ایک ڈی ایس پی سی آئی ڈی اور 15 اہلکار " اغوا برائے تاوان " کی وارداتوں میں ملوث ہونے کی وجہ سے گرفتار کرلیئے گئے۔ ظاہر ہے جس ملک کا صدر ماضی میں اغوا کی وارداتوں میں ملوث رہا ہو، جس کے وزیر وزراء ایسی وارداتوں میں ملوث ہوں، تو ان بچاروں کا کیا قصور۔ کیا ان کے ساتھ پیٹ نہیں لگا ہو، کیا انہیں بھتے نہیں دینے پڑتے، کیا انہیں پسند کے علاقوں میں جانے رشوت نہیں دینی پڑتی، اور اگر یہ سب کچھ کرتے ہیں، تو پھر شرابی کبابی بددیانت حکمران نہیں آئیں گے تو کون آئیگا۔ ہاں ایک بات اور بتاتا چلوں کہ ہوگا کچھ بھی نہیں، یہ بری بھی ہونگے، اور ان کی ملازمتیں بھی برقرار ررہیں گی۔ اور مغوی عبدالقدوس بھی یہ کہے گا کہ اسے کسی نے اغوا نہیں کیا، اور یہ الزامات غلط ہیں۔ اور آخر میں جی اے بھٹو، جی اے زرداری۔ جمہوریت ہی بہترین انتقام ہے مگر صرف عوام سے۔ یہ ہی نوشتہ دیوار ہے۔


Log in to reply
 

Looks like your connection to Discuss was lost, please wait while we try to reconnect.