بنیادی انسانی حقوق ۔ ۔ ۔ ھمارے لیے کوئی نیا تصوّر نہیں ۔۔



  • " جہاں تک ھم مسلمانوں کا تعلق ھے ، انسان کے بنیادی حقوق کا تصوّر ھمارے لیے کوئی نیا تصوّر نہیں ھے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

    ھو سکتا ھے کہ دوسرے لوگوں کی نگاہ میں ان حقوق کی تاریخ UNO کے چارٹر سے شروع ھوتی ھو ،

    یا انگلستان کے میگنا کارٹا ( Magna Carta ) سے اس کا آغاز ہُوا ھو ۔۔ لیکن ھمارے لیے اس تصوّر کا آغاز بہت پہلے سے ھے ۔۔۔

    مغربی دنیا میں انسانی حقوق کا تصوّر ہی دو تین صدیوں سے پہلے اپنی کوئی تاریخ نہیں رکھتا ۔۔۔ دوسرے اگر آج ان حقوق کا ذکر کیا بھی جا رھا ھے تو ان کے پیچھے کوئی سند ( Authority ) اور کوئی قوّتِ نافذہ ( Sanction ) نہیں ھے ، بلکہ یہ صرف خوشنما خواھشات ہیں ۔۔۔۔

    اس کے مقابلہ میں اسلام نے حقوقِ انسان کا جو منشور قرآن میں دیا ھے اور جس کا خلاصہ حضور نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلّم نے حجۃ الوداع کے موقعہ پر نشر فرمایا وہ اس سے قدیم تر بھی ھے اور ملّتِ اسلام کے لئے اعتقاد ، اخلاق اور مذہب کی حیثیت سے واجب الاتّباع بھی ۔۔۔ پھر ان حقوق کو عملًا قائم کرنے کی بےمثل نظیریں بھی حضور پاک صلعم اور خلفائے راشدین نے چھوڑی ھیں ۔۔۔۔ "

    ( سیّد ابوالاعلیٰ مودودی رح ، تفہیمات سوم )


Log in to reply
 

Looks like your connection to Discuss was lost, please wait while we try to reconnect.