Burma: Riots in Mandalay



  • مرکزی برما کے خطہ مینڈیلے کی بستی میٹیلہ سے جاری رپورٹ میں فرقہ وارانہ تشدد، زندگی کے نقصان، اور وسیع پیمانے پر املاک کے نقصان جن میں کئی مساجد اور ایک مدرسہ بھی شامل ہے پر امريکی حکومت کو سخت تشويش ہے۔ سونے کی دکان کے مسلمان مالکان اور بدھ گاہکوں کے درمیان ایک تنازعہ شروع ہوا اور بڑھ کر بڑے پیمانے کے فسادات کی شکل اختیار کر گیا۔

    بدقسمتی سے مقامی پولیس فسادات کو قابو پانے میں ناکام ہے۔ لہذا، امريکی سرکار مقامی حکومت کو امن اور رواداری کی حوصلہ افزائی کے مد میں بیان کو جلد از جلد جاری کرنے پر زور دے رہی ہے۔ رنگون میں امریکی سفارت خانہ اہم راہبوں سمیت اخلاقی حکام سے رابطہ کررہے ہيں اور انہیں بھی اس پیغام کو واضح کرنے کے لیۓ اکسا رہے ہیں.

    امریکی حکومت عوام کے درمیان امن، سمجھوتے، رواداری اور باہمی احترام کی کوشش کرنے کی حوصلہ افزائی جاری رکھے گی.

    افشاں – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    digitaloutreach@state.gov

    www.state.gov

    http://www.facebook.com/USDOTUrdu

    https://twitter.com/#!/USDOSDOT_Urdu



  • بڑا افسوس ہے کہ بدھ بھی پنجابيوں کی طرح حرکتيں کرنے لگے ہيں-



  • It is long story Yahya, to cut it short, these are those bengalis and biharis that ran away to save their skins during Bangladesh movement and settled in Burma. This was in addition to getting shelters in Assam and West Pakistan. After creation of Bangladesh most of the migrated muslims settled in their place of asylums. This caused hatred not only in Assam but also in Burma. The lower class of Myanmar or Burma thinks these non-burmese have gained strength in economy on the expense of those poor Burmese. Riots erupted on the same cause in Assam and now in Burma. The primary cause is economy and hatred for muslims is secondary. I am a true muslim, but that does not mean I should blindly shout barbarism by non-muslims against muslims.