Incompetent people elect Incompetent leaders!!



  • Good question Intaha! when Allah creat humen being, Allah said that I am giving it a brain which can 'think' and made its own decisions and choices. By that humen being will be his/herself responsible for his/her own deeds. Things of right and wrong are GIVEN in Quran, so everyone is responsible for it. There are personal and collective laws in Quran. Collective laws concern a collective society and such laws should be obeyed. Personal laws are on your choice if you want to follow or not. If you don't follow the consequences will be your. I hope you understand a Little bit.



  • موحترم انتہا

    .

    .

    .

    .

    خوشی ، اپنی تمام اقسام میں اچھائی ہے ~~~~ ہر چیز جو خوشی دے ، جو خوشی پیدا کرے یا جو خوشی کی حفاظت کرے وہ اچھائی ہے ~~~~ وہ مورل ہے ... ہر وہ چیز جو خوشی کو ختم کرے~~~~خوشی کو نقصان پونچایے وہ برائی ہے ~~~~ اس کے لئے ہمیں کچھ پرانی مذھبی کتابوں سے اصول اخذ کرنے کی ضرورت نہیں ~~~~~ یہ تمام دین کہتے ہیں کہ اسمانون میں کوئی خدا جس کی پوجا کرو ~~~ وہ اچھائی ہے ~~~ اس خدا کے لئے لڑو ~~~~ اس کے نظام کو لاؤ دنیا میں ~~~ چاہے دوسرے لوگوں کو تکلیف ہی کیوں نہ ہو ~~~~

    یہ تمام مذاہب فکری آزادی سے مطابقت نہیں رکھتے ہیں. یہ ذہنی ایمانداری کے، تحقیقات کے، اور سوچ کے دشمن ہیں. یہ آدمی کی سوچ کے دشمن ہیں ، یہ انسان کو ابدی انعامات کا وعدہ دے کے اس کی سوچ کو ختم کر دیتے ہیں

    یہ مذاہب نیکیوں کو غلام بناتے ہیں~~~~~ یہ غلط چیزوں کو مقدس بنا دیتے ہیں ~~~~~ یہ مصنوعی جرائم تخلیق کرتے ہیں~~~~~جیسے روزے کے دنوں میں کھانا کھانا ~~~~~ ایک ملا سے اختلاف کرنا ، ثبوت کا تقاضہ کرنا ، کسی عقیدہ کا انکار ، آپ کے مخلص خیالات کو ظاہر کرنا ، یہ سب کے سب گناہ ہیں ~~~~ کسی بھی خدا کے بارے میں اپنی ایماندارنہ رائے دینا یہ بہت بڑی گھستاخی ہے ،

    تمام دینی کتابیں کہتی ہیں ~~~~ کہ جو کچھ ان کا خدا کہتا وہ حق ہے اور اچھائی ہے اور مورل گائیڈ ہے . لیکن مرے نزیدیک . ذہانت مورل گائیڈ ہے ~~~~ اپ نے پوچھا اچھائی کیا ہے اور برائی کیا ہے ~~~~ اس کا جواب ذہانت میں ہے ~~~~

    **

    پھر میں کہتا ہوں: انٹیلی جنس صرف اخلاقی گائیڈ ہے.

    **



  • اپنے اپنے انداز میں خوشی حاصل کرنے والے اور خوشی سے تسکین حاصل کرنے والوں سے دنیا جہاں کی جیلیں بھری ہوئی ہیں

    خاص طور پر سوویت یونین میں جب مذھب کا مکمل انکار تھا تو اس زمانے میں بھی خوشی حاصل کرنے والوں سے جیلیں بھری ہوئی تھیں

    آجکل مغربی ممالک اور خاص طور پر امریکا میں جہاں مذھب کا قوانین بنانے میں کوئی کردار نہیں ہے کی جیلیں خوشی حاصل کرنے والوں سے بھری ہوئی ہیں اور دن بدن خوشی حاصل کرنے والوں میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے

    عجب بات ہے اتنی زیادہ خوشی حاصل کرنے والوں کے باوجود معاشروں میں امن و سکوں قائم نہیں ہو رہا اور سب سے عجیب بات ہے کہ اعلیٰ تعلیم یافتہ لوگ اسلام میں ہزاروں لاکھوں کی تعداد میں داخل ہو رہے ہیں ، پتا نہیں انہوں نے خوشی حاصل کرنے کے بارے میں کیوں نہیں پڑھا ، کیا تھا وہ اس فورم کا ہی ایک چکر لگا لیتے

    :)

    ف ج



  • @raheb

    If someone criticize something it do not necessarily mean that he/she has a solution of that also.

    =====

    بھائی مجھے ایسا لگتا ہے کہ بندہ کبھی کبھار اس طرح کی تنقید کرے تو اس سے دل کا غبار نکل جاتا ہے مگر جب بہت زیادہ کرے، خصوصاً عمومی اور منفی، تو اس سے لوگوں اور ماحول میں کوئی اچھی تبدیلی تو کم ہی آتی ہے زیادہ چانس اپنی شخصیت کے خراب ہونے کا ہوتا ہے



  • عقل ہی کو سب کچھ سمجھ لینے والوں کیلئے

    گزر جا عقل سے آگے کہ یہ نور

    چراغِ راہ ہے منزل نہیں ہے

    اک دانش ِنورانی ، اک دانش برہانی

    ہے دانش ِ برہانی، حیرت کی فراوانی

    وہ پرانے چاک جن کو عقل سی سکتی نہیں

    عشق سیتا ہے انہیں بے سوزن و تارِ رفو

    عقل عیار ہے سو بھیس بدل لیتی ہے

    عشق بے چارہ نہ مُلا ہے نہ زاہد نہ حکیم

    عقل کو تنقید سے فرصت نہیں

    عشق پر اعمال کی بنیاد رکھ

    تازہ میر ے ضمیر پر معرکہ کہن ہوا

    عشق تمام مصطفی، عقل تمام بولہب

    ف ج



  • جذباتی بھائی - السلام و علیکم

    کیوں کافر جی کو تنگ کر رہے ہیں؟ بیچارے نئے نئے کافر ہوئے اورایسا  نہ ہو کہ گھبرا کر کفر سے تائب  ہو  کر دوبارہ مشرف بہ اسلام ہو جائیں

    اس کافر کو تو مذھب کی تعلیمات کی الف بے سے بھی واقفیت نہیں ہے

    اپنی  توانائیاں کافر جی پر خرچ کرنے کیبجائے اصلی تے  نسلی کوڑھیوں کے لیے  بچا کر رکھ لیں

    :) :)



  • السلام و علیکم

    چند تبصرے جو کافر نام کی آئی ڈی نے لکھے ہیں اور جو کہا ہے کہ سوچ کے حوالے سے کہ دینی لوگوں کی سوچ اپنی نہیں ہوتی اور وہ اپنے لحاظ سے غور و فکر نہیں کرتے، یہ خیالات پڑھ کے تو لگتا ہے کہ اس آئی ڈی کا مطلب ہے کہ یہ نئی بوتل میں پرانی شراب ہے پہلے ایک جانور کے نام کی شناخت اور اب اس شناخت سے۔۔۔۔

    خیر باوا بھائی بالکل درست فرما رہے ھیں کہ اس بندے کو دین کے حوالے سے کچھ پتہ نہیں اسی لیے یہ بات کی جارہی ہے کہ مسلمان اپنے ذہن سے نہیں سوچ سکتا ہے۔ دین اسلام جتنی غور و فکر کی دعوت انسان کو دیتا ہے، اتنا کوئی اور نظام نہیں دیتا، قرآن پاک میں متعدد جگہوں پہ یہ اللہ رب العزت اپنی قدرت کی نشانیاں بتاتے ہوئے فرماتا ہے کہ اس میں نشانیاں ہیں ان لوگوں کیلیے جو عقل رکھتے ھیں، وہ نشانیاں کیا ہیں، جب انسان غور و فکر کرتا ہے اور قدرت کے مظاہر پہ غور کرتا ہے تو اس کو بہت کچھ سیکھنے کو ملتا ہے۔ اور اہل عقل کیلیے جو نشانیاں ہیں اس کا تعلق صرف مسلمان سے نہیں کیونکہ عقل ایسی چیز ہے جو غیر مسلم کے پاس بھی ہے۔ جب انسان قدرت کے مظاہر پہ غور کرتا ہے تو اپنے خالق سے اور قریب ہوجاتا ہے۔ اور اللہ چاہتا ہے کہ انسان اپنے ذہن کو کھولے، اسی لیے اس نے ہمیں کچھ دعائیں بھی عطا فرمائی ہیں، جیسا کہ رب زدنی علما، اے میرے رب میرے علم میں اضافہ فرما۔ یعنی اللہ تعالیٰ خود یہ چاہتا ہے کہ اس کا بندہ زیادہ سے زیادہ سیکھے۔ اگر آپ قرآن کی آیات پہ ہی غور کریں تو آپ کو پتہ چلے گا کہ کیا کچھ ہے اس میں سیکھنے کیلیے، رب المشرقین و رب المغربین، وہ دو مشرف اور دو مغرب کا رب ہے، آپ کہہ سکتے ھیں، مشرق دو اور مغرب دو کیسے ھیں، تو اس پہ بھی غور کریں تو اس کا جواب مل جائے گا، سورج کی حرکت سے جو سارے سال ہوتی مشرق کے ایک سرے سے دوسرے سرے تک۔ کیونکہ سورج مشرق سے نکل کر مغرب میں غروب ہوجاتا ہے۔ آج کی سائنس کہتی ہے کہ سورج بالکل مشرق سے کچھ دن نکلتا ہے اس کے علاوہ وہ اکثر دن جنوب مشرق اور شمال مشرق کی طرف سے بھی نکلتا ہے۔ بعنی کے مشرق کے بھی حصے ھیں۔ اسی طرح مغرب کا بھی بالکل مغرب میں سورج غروب صرف کچھ دن ہوتا ہے اور باقی دن جنوب مغرب یا شمال مغرب میں۔ اس حوالے سے یہ آیت بہت اہم ہے۔ اگر مزید مطالعہ کیا جائے تو بہت کچھ سیکھنے کو ملے گا۔ بہت سارے ایسے لوگ ہیں جو بغض سے پاک ہو کے اپنے خالق کی تلاش میں نکلے اور انہوں نے خالق کو پا لیا، اسی لیے اسلام تیزی سے پھیل رہا ہے تمام تر فتنوں کے باوجود۔

    جہاں تک روزے کے حوالے سے بات کی تو اس کا جواب یہ ہے کہ جب سال کے گیارہ مہینے آپ کھاتے رہتے ھیں تو ایک مہینہ آپ کے معدے کی صفائی کیلیے بھی چاہیے۔ اور اگر طبی لحاظ سے دیکھا جائے تو روزے کے بہت طبی فوائد بھی ہیں۔ اللہ تعالیٰ نے ہر عبادت انسان کی بھلائی اور فائدے کیلیے بنائی ہے اگر غور کیا جائے تو۔ لیکن جن کے دل کینے سے بھرے ہوں وہ یہ باتیں کیا جانیں۔ اسی طرح اور بہت سے مسنون کام ہیں جس سے انسان کیلیے بہت فوائد ہیں جس طرح کے بیٹھ کے پانی پینا، مسواک وغیرہ۔۔

    آپ کو کافر کا لغوی معنی بھی پتہ ہے، اس کا مطلب ہے رد کرنے والا، انکار کرنے والا، چھٹلانے والا۔ جس نے پہلے سے یہ طے کیا ہوا ہو کہ ہر چیز کو اپنی ہٹ دھرمی سے رد کرنا ہی ہے تو ایسے بندے سے کسی منطقی بات کی توقع نہیں کی جاسکتی۔



  • موحترم جذباتی ، موحترم باوا، موحترم یو پاکی

    یہاں پہ کچھ لوگوں کو اقبال کے شعر کوپی کرنے بہت عادت سی ہے ~~~ لہٰذا تھوڑی سی بات اقبال کے اوپر کرتے ہیں اقبال کی جدید اسلامی ریاست~اپنی کتاب اسلام میں "مذہبی فکر کی تعمیر نو" میں ان کے خیال ابھر کر سامنے اتے ہیں ~~~~اقبال کی جدید اسلامی ریاست لوگوں کی طرف سے منتخب نمائندوں کی طرف سے ایک ریاست ہے ~~~~~~ اس ریاست میں ~سپریم قانون سازی کے علاوہ میں، غیر مسلم ارکان سمیت پارلیمنٹ، اسلامی روایات، سول کوڈ اور ضابطہ فوجداری کو جدید بنانے کا تصور ہے ~~~~~ جس میں گرینڈ نیشنل اجتہاد کونسل کا شامل ہونا بھی تھا~ اقبال اسلامی ریاست اور اسلام کو مکمل طور پر جدید دور کے مطابق تبدیل کرنا چاہتے تھے ~~~~~~ جس کی وجہ دیکھا جاے ان کی کتاب پر ملاؤں کی طرف سے متفقہ طور پر مذمت کی گئی تھی ~~~~~ اور اکثر ملاؤں نے ان کو کافر قرار دیا ~~~~ اور کہا کہ ان کو تو دین کی "الف " "ب" کا بھی نہیں پتا اور آج ان مللاؤں کے بچے اقبال کے کچھ خاص چیدہ چیدہ شعر اپنی مرضی سے چن کر اقبال کو اپنی مرضی کا بناتے ہیں ~~~~~~ اقبال کے تصور پر یہ ریاست اگر قائم ہوتی تو میں یقین سے کہتا ہوں جس اقبال کو کافر کہا گیا تھا تو یہ ملک آج سپر پاور ہوتا~~~~~ اقبال کے ہاں کافر کا تصور وہ نہیں جو ملا کے ہاں ہیں ~~~~~ اقبال نے خودی کے منکر کو کافر کہا ~~~~~~~ اقبال کا یہ شعر اس چیز کا صاف ثبوت ہے ~~~~~~~

    منکر حق نزد ملا کافر است

    منکر خود نزد من کافر تر است

    اللہ کے وجود سے انکار کرنے والا ملا کے نزدیک اگر کافر ہے تو اپنی ہستی اور وجود کا منکر مرے نزدیک اصل کافر بڑا کافر ہے ~~~~~~ یعنی اقبال کی نظر میں مومن کوئی اور جس کو اپ لوگ اکثر کافر کہتے ہیں

    محترم جذباتی صاحب نے کچھ اشعار لکھ تو دےلیکن تفصیل میں مجھے جانا پڑے کیوں کہ کہ تحقیق میں کافر جاتا ہے مسلمان کو ویسے جو چیز جدھر سے ملی پوسٹ کر دی ~~~ اور ہر چیز کو اپنی مرضی کا بنا دیتا ہے ~~~~اقبال کا تصور عقل اور عشق اصل میں رومی سے نکلا ہے ~~~~~ اور رومی اپنے اپ کو کسی مذہب کا پیروکار نہیں کہتا تھا اور اقبال رومی کا شاگرد تھا ~~~~~ ~~~~~ اپنی نظم میں وہ کہتا ہے

    Not Christian or Jew or

    Muslim, not Hindu,

    Buddhist, Sufi, or Zen.

    Not any religion

    or cultural system. I am

    not from the east

    or the west, not

    out of the ocean or up

    from the ground, not

    natural or ethereal, not

    composed of elements at all.

    I do not exist,

    am not an entity in this

    world or the next,

    did not descend from

    Adam and Eve or any

    origin story. My place is

    the placeless, a trace

    of the traceless.

    Neither body or soul.

    I belong to the beloved,

    have seen the two

    worlds as one and

    that one

    call to and know,

    first, last, outer, inner,

    only that breath breathing

    human being.

    رومی اور اقبال کا مذہب انسانیت تھا ~~~~ اور وہ اسی عشق کی بات کر رہے ہیں ~~~~~ رومی کی نظر سے اگر دیکھا جاے تو تمام بڑے بڑے مفکر، شاعر اور سائنسدان سب کے سب عشق کی دولت سے مالا مال تھے

    .

    .

    .

    .

    .

    .

    
    Why think thus O men of piety  
    
    I have returned to sobriety  
    
    **I am neither a Muslim nor a Hindu  
    
    I am not Christian, Zoroastrian, nor Jew**
    
    I am neither of the West nor the East  
    
    Not of the ocean, nor an earthly beast  
    
    I am neither a natural wonder  
    
    Nor from the stars yonder
    
    Neither flesh of dust, nor wind inspire  
    
    Nor water in veins, nor made of fire  
    
    I am neither an earthly carpet, nor gems terrestrial  
    
    Nor am I confined to Creation, nor the Throne Celestial
    
    Not of ancient promises, nor of future prophecy  
    
    Not of hellish anguish, nor of paradisic ecstasy  
    
    Neither the progeny of Adam, nor Eve  
    
    Nor of the world of heavenly make-believe
    
    My place is the no-place  
    
    My image is without face  
    
    Neither of body nor the soul  
    
    **I am of the Divine Whole.**


  • کافر جی

    آپ کو تو "کافر" بھی نہ ہونا آیا

    کسی کوڑھی سے مل لیتے تو اتنے کچے کافر نہ ہوتے

    :) :)



  • ہا ہا ہا ہا

    سب سے پہلے خود اقبال کے حوالے دینے شروع کیے ، جب اقبال کے جوابی حوالے دئیے اور ان سے نکتہ نظر کی دھجیاں بکھر گئی تو بھاں بھاں شروع ہو گئی

    میں تو جناب اقبال کو حوالے کیلئے کبھی استمعال ہی نہیں کرتا ، کہ میرا حوالہ تو قرآن و سنت ہے

    ویسے آپس کی بات ہے کہ اقبال اور رومی کا حوالہ بھی قرآن و سنت ہی ہے لیکن حق اور سچ کو چھپانے والا اس بات کا کبھی اقرار نہیں کرے گا

    عربی زبان میں کافر کے معنی کسی چیز کو چھپانے والے کے ہیں اسی لئے عربی زبان میں کسان کو بھی کافر کہا جاتا ہے کہ وہ بیج کو زمین کے اندر چھپاتا ہے ، اصطلاح میں حق اور سچ کو چھپانے والے کو کافر کہا گیا ہے ، اور کافر ہمیشہ اس بات کو ثابت کر دیتا ہے جب وہ اپنی حق اور سچ کو چھپانے والی فطرت سے نہیں رہ سکتا

    بتوں سے تجھ کو امیدیں ، خدا سے نا امیدی

    یہ تو بتا اور کافری کیا ہے ... والی مسکراہٹ کے ساتھ

    ف ج



  • محترم جذباتی صاحب

    .

    .

    .

    .

    حوالہ سب سے پہلے موحترم باوا صاحب نے دیا تھا ~~~~~ میں نے ان کو سمجھانے کے لئے حوالے دیے تھے ~~~~~~ حوالے صرف اس لئے دیے کیوں کہ اپ میری بات کو تو نہیں مانتے شائد اس کی بات کو مان جائیں گۓ جس کا حوالہ دیا جا رہا ہے ~باقی اپ نے کہا کہ رومی اور اقبال کا حوالہ بھی قرآن سنت ہے ~~~~ رومی نے تو صاف لکھا ہے ~~~~ کہ اس کا تعلق کسی مذهب سے نہیں ~~~~ نہ ہی وہ آدم اور حوا سے پیدا ہوا ~~~ نہ ہی اس کو تخلیق کیا گیا ~~~~~~ قرآن نے تو تخلیق کی بات کی ہے ~~~~ ابھی سمجھ نہیں آ رہی آپ کی بات مانیں یا رومی کی ~~~~~~ مرے خیال ہے اپ سچ کہ رہے اور رومی جھوٹ بول رہا ہے ~~~ اپ کے ہاتھ میں تلوار جو ہے ~~~~~ ~~~~~ مرے پاس تو صرف پیار ہے ~~~~~~~ ایک ایسے آدمی کو روحانی پیشوا ماننا جس کا تعلق کسی بھی مذهب سے نہ ہو یہ بہت بڑی بات ہوتی ہے ~~~~ رومی کا کیا حال سناؤ~ وہ تو کہتا تھا محمّد بھی مسلمان نہیں تھے ~~~~~ یعنی محمّد ایک عالم گیر پیغمبر تھا ~~~~ وہ تمام انسانیت کا پیغمبر تھا ~~~~~~~ اس کو تعلق کسی دین سے نہیں تھا ~~~~ اپ سچ کہ رہے ہیں

    رومی اپنی ایک کتاب میں لکھتا ہے محمد ایک مسلمان نہیں تھا ، بدھا ایک بدھ مت نہیں تھا ~اور مسیح ایک عیسائی نہیں تھاتو کس طرح رومی ایک مسلمان ہو سکتا ہے؟ مذهب ایک کائناتی تباہی ہے ~~~~~ کیوں کہ جیسے ہی مذهب ایک مقدس آگ روشن کرتا ہے اس آگ کو جلانے کے لئے لوگ اپنی طرف کہانیاں بنا لیتے ہیں ~~~~~~~ رومی ایک جگہ کہتا کہ خدا تک پونچنے کے ہزاروں طریقے ہیں ~~~~~ میں نے موسیقی اور ڈانس کا طریقہ چنا ~~~

    ایک بات تو بتائیں اپ مسکراتے بہت ہیں



  • مجھ تک کب انکی بزم میں آتا تھا دور جام

    ساقی نے کچھ ملا نا دیا ہو شراب میں

    معنی خیز مسکراہٹ کے ساتھ

    ف ج



  • @FJ Saab

    You should pray you don't get desired attention. Because as soon as you get one you find yourself in middle of nowhere.

    :)



  • @Kafir bhai

    If you are not Hakka Bakka you got to be his twin brother. Keep on writing Sir Jee, soon kafir will be most desireable word on the forum. The dim line distinguishing Kafir and momin is getting dimmer and dimmer.

    :)



  • Shirzi Ji

    "If you are not Hakka Bakka you got to be his twin brother"

    میں نے تو صرف اشارے میں بات کی تھی ، آپ تو براہ راست وہاں تک جا پہنچے ہیں .

    کچھ نا سمجھے خدا کرے کوئی والی مسکراہٹ کے ساتھ

    ف ج



  • Keep on writing Sir Jee, soon kafir will be most desireable word on the forum.

    .

    .

    شیرازی جی

    لیکن "کوڑھی" کا کوئی توڑ نہیں ہے

    :) :)



  • کافر نے آ کے دھوم کچھ ایسی مچا ئی ہے

    فورم پہ آج ہر طرف اس کی دھائی ہے

    اب جھوٹ کی دکانیں کرو بند دوستو

    اکیسویں صدی یہی پیغام لائی ہے



  • مہا کوڑھی کی عمر ہے اتنی صنم

    نئی چول سے شروع نئی چول پہ ختم

    :) :)



  • Has religion influenced people or have people influenced religion is what baffles me all the time.



  • The main topic of this post was, "Incompetent people elect incompetent leaders".....but after following it here in last few Days, topic has become,

    "Incompetent (so called) religious leaders (mullas) produce incompetent (so called) muslims".

    And it's a Bigger trauma for this nation than main topic because it has destroyed the whole main concept of Islam and it becomes only Mulla'ism, and we can see how these infected mullas Shouting in highly voice just as there leaders shout in loudspeakers of masjids.....on the name if Islam.