کیا اسلامک بنکنگ صحیح معانی میں اسلامک ہے؟



  • h ttps://www.youtube.com/watch?v=jXEJ6UPSaHk

    https://www.youtube.com/watch?v=jXEJ6UPSaHk



  • Good point made by Ghamidi Saheb.

    In a business transaction you must have a 50-50 chance of a profit or a loss. Any transaction that is 100% immunized either of a loss or a profit is haram.



  • اسلامی بینکنگ یا اسلامی مالیاتی نظام کا کوئی وجود نہیں ہے ...اور نہ ہی یہ تاریخ سے ثابت ہوتا ہے ... صرف یہ کہ دینا کہ سود حرام ہے اس سے کوئی مربوط مالیاتی نظام وجود میں نہیں آجاتا....اسلام کے اکثر عقائد ، ان کے ایک کے سوا سارے نبی ..حتی کہ ان کا قبلہ اول ...سب دوسروں سے ادھار لی ہوئی چیزیں ہیں ...اسی طرح اسلامی بینکنگ بھی کیپٹلزم میں معمولی ترامیم کرکے وجود میں لائی گئی ہے ...اکثر مسلمان ملکوں نے سٹوڈنٹس کے لیے یا غریب طبقے کے لیے کچھ سکیمیں شروع کی ہوئی ہیں جن میں بلا سود قرضے کی سہولت میسر ہے ...بس یہ لوگوں کا منہ بند کرنے کے لیے کافی ہے ورنہ ان دو چار چیزوں سے نظام غیر سودی نہیں بن جاتا

    اچھا اب غامدی کیا کہ رہا ہے؟ غامدی کے اصول کے مطابق منافع کی صورت میں بینک کو سود دینا جائز ہے (یہ سود نہیں بلکہ منافع کا حصہ ہے) لیکن بزنس ڈوب گیا تو بینک آپ سے صرف اصل زر کا مطالبہ کر سکتا ہے سود کا نہیں .....اب دیکھتے ہیں اس اصول کے مطابق کتنے مسلمان کسی بینک سے قرضہ حاصل کرنے میں کامیاب ہوتے ہیں

    اگر مسلمانوں کو سود سے اتنا ہی مسئلہ ہے تو قرضوں پر مکمل پابندی کیوں نہیں لگا دی جاتی ...نہ قرضہ لو نہ سود دو ...اللہ اللہ خیر صلیٰ



  • جہاں تک ففٹی ففٹی منافع نقصان والی بزنس ٹرانزیکشن کی بات ہے...اس بڑی بے تکی بات کیا ہو گی ..یعنی اگر میں کسی مضبوط کمپنی جیسے ایپل کمپیوٹرز، گوگل یا کسی تیل کی کمپنی شیل یا برٹش پیٹرولیم وغیرہ میں انویسٹ نہیں کرسکتا کیونکہ مجھے نوے فیصد امکان ہے کہ میرے سٹاک کی ویلیو بڑھے گی ....اسلامی نظام کے مطابق مجھے کسی ایسی جگا رقم لگانی چاہئیے جہاں پچاس فیصد امکان ہو کہ میری رقم ڈوب جائے گی ...صدقے جاواں



  • I don't think Dar Saab literally meant 50-50. He probably meant business model with profit-loss possibility like stock market is OK but guaranteed profit as in case of different kind of saving accounts is not OK. Banks of course are paying people interest from the profits that they accrue through investments but what if they incur loss. Will they stop paying people interest? They still have to fulfill their commitment. So in that sense they are promising guaranteed profit, it's not just profit sharing.



  • Would be helpful if some resident economist can explain the interworking gold tagged economy of ten Hijri with the modern paper printing financial system.

    More than mandatory profit and loss, the "Time Value of Money" concept (simply means financing) needs more discussion in an inflation based economy and only a ten percent cash - money multiplier banking system verses a gold standard system.



  • "کیا اسلامک بنکنگ صحیح معانی میں اسلامک ہے؟ "

    Modern banking system is based on 'Interest'. Remove 'Interest' from the Banks, all the banks will collapse.



  • Interest is a payment that a person has to payback to the bank from his/her own resources since bank doest create interest payments.

    In simplest terms, all central banks issue money as debt thus for every investment, mortgage etc money is created with the requirement of interest. Therefore , Interest payments are source of wealth transformation from lower ranks to higher and wealth accumulation because money , at it source is laddan with debt. At the moment this circle has expanded to engulf whole world and we see visible movement of wealth from lower to upper ranks of the society.

    Solution is to remove interest from money and make money debt free. It is possible to do banking in interest free environment in fact in Sweden JAK banks are result of such thought. I believe such a model could also be adopted for Pakistan with relative ease



  • @Shirazi sahib

    Savings accounts may seem to generate guaranteed profit but in reality, is that true? No, it's not.

    Banks take our money and invest. Some banks get greedy and invest in risky schemes to generate more profit. Any bank is like a business, it can fail. When they do (like Washington Mutual or Lehman Brothers a few years ago), lots of people lose their life savings. In USA, FDIC, an independent agency, insures our deposits at the bank for up to 250,000. Suppose one has a million dollars in the savings account and getting good interest payments every month but in reality, only first 250,000 is protected by the government; the rest 750,000 may be vulnerable.

    The fact is unknown to many people in US is that not all banks are FDIC insured, meaning if the bank goes under, you get nothing. You have to wait till the assets of the failed bank get liquidated and you may get a fraction of the money back if you get lucky.

    Stock, bonds, money market mutual funds, or different annuities aren't even insured; only savings and checking accounts are.

    So, nothing is guaranteed if we put our money in the bank. There is always a risk to our investment.

    So, the question is does that risk make our interest payments 'Halal'?

    :-)



  • @Qarar Saab

    Thanks for the detailed explanation. It seems like per Ghamdi Saab that risk is enough to label that interest Halal.



  • There are more better Banking Systems than outdated Islamic Banking.


    انارکلی

    واللہ ، ہم اسلامی نظام کے خلاف نہیں

    ہم اپنے اصولوں کے غلام ہیں

    لاکھوں مسجدوں اور مدرسوں میں بیٹھے سلاجیت بیچنے والے کو پیغام دینا چاہتے ہیں

    کہ سلاجیت سے بہتر فارمولا دریافت ہو چکا ہے



  • سلامی بینکنگ یا اسلامی مالیاتی نظام کا کوئی وجود نہیں ہے ...اور نہ ہی یہ تاریخ سے ثابت ہوتا ہے ... صرف یہ کہ دینا کہ سود حرام ہے اس سے کوئی مربوط مالیاتی نظام وجود میں نہیں آجاتا....اسلام کے اکثر عقائد ، ان کے ایک کے سوا سارے نبی ..حتی کہ ان کا قبلہ اول ...سب دوسروں سے ادھار لی ہوئی چیزیں ہیں ...اسی طرح اسلامی بینکنگ بھی کیپٹلزم میں معمولی ترامیم کرکے وجود میں لائی گئی ہے ...اکثر مسلمان ملکوں نے سٹوڈنٹس کے لیے یا غریب طبقے کے لیے کچھ سکیمیں شروع کی ہوئی ہیں جن میں بلا سود قرضے کی سہولت میسر ہے ...بس یہ لوگوں کا منہ بند کرنے کے لیے کافی ہے ورنہ ان دو چار چیزوں سے نظام غیر سودی نہیں بن جاتا

    اچھا اب غامدی کیا کہ رہا ہے؟ غامدی کے اصول کے مطابق منافع کی صورت میں بینک کو سود دینا جائز ہے (یہ سود نہیں بلکہ منافع کا حصہ ہے) لیکن بزنس ڈوب گیا تو بینک آپ سے صرف اصل زر کا مطالبہ کر سکتا ہے سود کا نہیں .....اب دیکھتے ہیں اس اصول کے مطابق کتنے مسلمان کسی بینک سے قرضہ حاصل کرنے میں کامیاب ہوتے ہیں

    اگر مسلمانوں کو سود سے اتنا ہی مسئلہ ہے تو قرضوں پر مکمل پابندی کیوں نہیں لگا دی جاتی ...نہ قرضہ لو نہ سود دو ...اللہ اللہ خیر صلیٰ

    چیزوں کو ہمیشہ سمجھنے کی ضرورت ہوتی ہے۔ اسلامی نظام یا بنیکاری کا وجود ہے۔ اور وہ فلاح کے لیے ہے نہ کہ غریب کی کمر توڑنے کے لیے۔۔ جدید دور کی بنیکاری کی بنیاد اگر میں غلط نہیں ہوں تو سولہویں صدی میں رکھی گئی تھی،

    سود پیسے کے اوپر پیسہ کمانا ہوتا ہے، اور جو پیسہ ادھار دے رہا ہوتا ہے وہ اس پیسے سے پیسہ کماتا ہے مثال کے طور پہ اگر کریڈٹ لیا جائے اس کی کم سے کم ادائیگی یا انگریزی میں منیمم پیمنٹ رکھ دی جائے اور اس پہ ہر مہہنے پرسنٹیج لگادیں مطلب یہ ہوا کہ آپ نے اس مہینے کم از کم ادائیگی تو کردی لیکن اگلے ماہ جو بقایا رقم رہ گئی اس پہ مزید سترہ یا بارہ فیصد لگا دو اب اس حساب سے قرض مزید بڑھ گیا۔ اور اگر دینے والے نے پھر کم سے کم پیمنٹ کی تو پھر اگلے مہینے بڑھتا گیا۔ یہ ایک ایسا مکروہ جال ہے اور ایسا سودی نظام ہے جو انسان کی کم توڑ کے رکھ دیتا ہے۔ اور اسی فارمولے کے تحت یہ جو ورلڈ بینک اور آئی ایم ایف کا نظآم ہے یہ چل رہا ہے۔ جو سود در سود پہ چل رہا ہے جس نے تیسری دنیا کے ممالک کی کمر توڑ کے رکھ دی ہے، براہ راست بوجھ غریب پہ ڈال دیا جاتا ہے۔ اور جب ان کی کرنسی جس فارمولے کے تحت کم کردی جاتی ہے تو اس حساب سے وہ ساری زندگی اس بوجھ سے نکل نہیں پاتے۔۔ یونان اور سپین کے ساتھ جو ہورہا ہے اس کو ذرا سوچ لو۔

    اسلام میں اسی چیز کی ممانعت کی گئی ہے اور سود کے کاروبار کرنے والے کو اللہ اور رسول کے ساتھ جنگ کرنے کے مترادف قرار دیا گیا ہے۔ کیا اس کا اثر اللہ پہ پڑرہا ہے جو اللہ کے ساتھ جنگ ہوگی اس سے عام آدمی کا نقصان ہورہا ہے۔۔

    اپنے دماغ کو ہلاو گے تو سمجھ پاو گے یہ نظام یہ کوئی راکٹ سائنس نہیں ہے۔ اسلام تو قرض دار کو مہلت دیتا ہے۔

    سورہ بقرہ، سورہ روم اور اس طرح مختلف مواقع پہ قرآن میں اس کی ممانعت کی گئی ہے۔۔۔



  • حضور والا ....اگر کوئی حکومت سود کے بغیر قرضہ دینا چاہتی ہے ...غریبوں کی مدد کرنا چاہتی ہے تو اسے کون روک رہا ہے ...اسے ضرور کرنا چاہئیے ...لیکن یہ نقصان کا سودا ہی ہوگا کیونکہ کسی بھی حکومت کے پاس لا محدود فنڈ نہیں ہوتے...لیکن پرائیویٹ بینکوں یا مالیاتی اداروں کو خیرات والے کام میں کیوں گھسیٹ رہے ہو ....قرضے کی شرائط تو سب کے سامنے ہوتی ہیں ...کوئی بھی چیز ڈھکی چھپی نہیں ...اگر شرائط پسند نہیں تو نہ لو قرضہ کوئی زبردستی ہے



  • بات نظام کی ہورہی ہے اگر ایک نظام کی بنیاد ہی ٹھیک نہیں ہوگی تو پھر مالیاتی ادرے کیا اور حکومتیں کیا سب سود پہ ہی چلیں گی اور غریب پسے گا۔ پیسے کمانے کے اور بھی بڑے طریقے ہیں غریب کا خون چوسے بغیر بھی کمایا جاسکتا ہے یا سودی نظام کے بغیر۔



  • Don’t believe Ghamdi in above clip mentioned risk as a reason for interest being haram. Ghamdi is correct in saying that it is the dealing of bank when it is lending the money that determines whether the return earned is a profit or an interest.

    There are two types of banks, commercial and financial.till late 1990s financial banks were not allowed to touch their commercial banking arms deposits and commercial banks were not allowed to invest in financial instruments. They are allowed to loan and mortgage and earn interest on the money loaned. between late 1990s and 2009 this restriction was removed and as a result financial banks were allowed to utilize commercial banking deposits to play, bassically high stake gambling which resulted in economic meltdowns ( commercial banks give mortgages-->diced , chopped and securitized the mortgages--> investment arm of same bank sold these new securities to investors. as a result , and due to relaxed oversight lots of bad mortgages were sold as aaa investments this was the reason of financial collapse. This form of speculative investment is, in any shape or form, haram

    Commercial banks don’t use savings deposits to forward loans and mortgages. They use fractional reserve banking against these deposits to increase money supply and earn interest on it, usually a lot higher then the return they promise on the savings deposits. This is why it is always possible to withdraw the money from a savings account. Due to immoral , haram and unethical practice of Fractional reserve banking , banks can create money supply equal to 90% of the deposited amount 100 times over!! . This is the money that banks did not own, no one deposited in to the banks and now banks entitled themselves to earn interest upon these loans.

    Person, or business acquiring the loan is required to pay the interest REGARDLESS of the result of such investment this is where interest earned on the savings account becomes haram. Banks have recourse to go after other assets of either the company or the person in case of default. This is already a haram practice since money that banks loan out, due to fractional reserve nature, is not banks OR depositors money to begin with so they don’t have any right to demand a return on and/or collateral in case of a default.

    Savings accounts, in their current state, are haram because they allow banks to perform an illegal and haram function and return on the savings account is haram because of the nature of deal between the bank and the person taking the loan. Changing the nature of banking to full reserve banking and nature of loans to profit and loss sharing investments like in stocks may make savings account halal.



  • بات نظام کی ہورہی ہے اگر ایک نظام کی بنیاد ہی ٹھیک نہیں ہوگی تو پھر مالیاتی ادرے کیا اور حکومتیں کیا سب سود پہ ہی چلیں گی اور غریب پسے گا۔ پیسے کمانے کے اور بھی بڑے طریقے ہیں غریب کا خون چوسے بغیر بھی کمایا جاسکتا ہے یا سودی نظام کے بغیر۔

    مسلمان چاہتے ہیں کہ اس دنیا میں خیرات وغیرہ کرکے ثواب کمایا جائے اور آخرت میں حوریں ....باقی دنیا حوروں پر یقین نہیں رکھتی ...وہ اسی دنیا میں پیسا کمانا چاہتے ہیں ...ان لوگوں کو آخرت کا ٹیکا نہیں لگایا جاسکتا



  • مسلمانوں کی بات نہیں ہورہی تھی ایک سودی نظام کی بات میں کررہا تھا جو کہ موضوع تھا آپ مسلمانوں حوروں اور خیرات پہ کہاں لے گئے ۔۔۔ زیربحث موضوع کا حوروں یا مسلمانوں کی خیرات سے کیا تعلق ہے۔۔

    ان لوگوں کو آخرت کا ٹیکا لگانے کی ضرورت نہیں ہے۔ یہ ان کی بھی الہامی کتابوں میں آخرت کا ذکر ہے۔ چلو اگر ان کے لیے صرف دنیا ہی ہے تو کیا خون چوس کے غریب کا پیسہ کمانا ہے۔۔ جو سمجھدار یا با ضمیر بندہ ہوگا چاہے کسی مذہب سے تعلق ہو یا نہ ہو وہ اس نظام پہ ہی لعنت بھیجے گا



  • مسلمانوں کے اپنے ملک اسلام کی وجہ سے بہت ترقی پذیر ہیں ... نہ بجلی ہے ہے نہ پانی ... لوگ بھوک-سے مر رہے ہیں کچھ شیخ عیاشی کر رہے ہیں .. یو پاکی صاحب جیسے مسلمان برطانیہ میں خوش ہیں ... اپنے ملکوں میں ان کو روز گار نہیں ملتا .. وہاں جا کر یہ اپنے ملکوں میں بجاے مغربی نظام لانے کے ان کو کوسنا شروع ہو جاتے ہیں ... یعنی ان ملکوں کو بھی اسلام ملکوں جیسا بنانا چاہتے ہیں .....

    تا کے نہ رہے بین نہ بجے بانسری ساری دنیا ١٤٠٠ سال پیچھے چلی جاۓ ..



  • Three terms need to be carefully understood in the context of Islamic Banking.

    Business, Profit & Interest

    Doing a business with a prior expectation of either making a profit or a loss from this deal is absolutely halal. Making a profit from such a business deal is also halal.

    Then what is the difference between profit and interest?

    Profit is an earning made from a business transaction in which you expect either a profit or a loss from that transaction. So if your deal is successful you can make a profit otherwise you will suffer a loss. So you expect both profit or a loss prior to the execution of that deal.

    While interest is an earning from a business transaction in which you completely eliminate the risk of suffering a loss prior to the execution of the deal. In other words interest is an earning where you are 100% guaranteed of a profit by immunizing yourself from a loss prior to that transaction.

    This is the basic difference between profit and the interest.

    Profit is halal while interest is haram.

    Now some would argue what's so wrong about elminating the risk of a loss?

    The answer is very simple. When you eliminate the risk of a loss from a business transaction then the wealth no longer circulate in that economy and it is concentrated in the hands of those people who control the money supply in that economy i.e. the modern day banksters.

    So what is the result then? Unlike an interest-free economy where the wealth would keep circulating among the masses, in an interest-based economy most of the wealth is accumulated by a handful of predatory elite who then enslave the rest of the mankind. This predatory elite actually lives off the blood and sweat of the masses by enslaving them in debt forever. So in such an economy and society those who are rich will keep on getting richer and richer and those who are poor will remain poor forever.

    If you look at the current global financial problems, you will find the interest based banking and monetary system at the root of this very serious problem. From Greece to Portugal and from US to Japan. A very small number of financial elite now control the wealth of the entire planet. They have not just enslaved the countries but the entire global population with their interest based banking system.



  • The point which Ghamidi is alluding to is called "Mudaraba" in Islamic Banking.

    **

    Mudaraba (مضاربة) is a contract whereby one side the investor or Rabb ul Mal contributes money and the other side work, being the manager or Mudarib. The Rabb ul Mal bears all losses, and the Mudarib earns a profit share.

    **

    So in this case Bank can lend money to the borrower on a condition that if that person or company makes a profit from that business deal bank can share it too but there is no guaranteed profit for the bank prior to the deal or even in the case of a loss.